جوہری معاہدے کے تحفظ کیلئے سفارتی راستہ برقرار ہے: ایرانی صدر

تہران، ارنا – ایرانی صدر نے کہا ہے کہنے کہا ہے کہ جب تک ایرانی قوم کے مفادات کا احترام ہوتا رہے گا تب تک جوہری معاہدے کے تحفظ کے لئے سفارتی راستہ بند نہیں بلکہ بدستور برقرار رہے گا.

یہ بات "حسن روحانی" نے بدھ کے روز کابینہ کے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہی.

انہوں نے مزید کہا ہے کہ جوہری معاہدے سے متعلق دروازے بند نہیں بلکہ یورپ سمیت دیگر فریقین کی کوششیں جاری ہیں.
اس موقع پر انہوں نے جوہری معاہدے کے تحفظ کے لئے فرانس کے منصوبے کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ اس منصوبے کی بناپر اسلامی جمہوریہ ایران جوہری ہتھیار کو پیچھا نہ کرے جو ہم نے بھی ہمیشہ اس موضوع کو کہا ہے، ایران علاقائی سلامتی اور خطی آبی گذرگاہوں کی مدد کرے جو ہم نے بھی ہمیشہ مدد کی ہیں.
انہوں نے اس بات پر زور دیا کہ امریکہ تمام پابندیوں کو خاتمہ کرے تیل کی فروخت فوری طور پر شروع ہوگی جس کی رقم دستیاب کر دے گا۔

صدر روحانی نے کہا کہ نیویارک میں تمام درخواستوں ، گفتگو اور کالوں کا مقصد ایک بار پھر گروپ 5+1 کی تشکیل تھا، ہم نے بھی کہا تھا کہ مناسب حالات میں کوئی مشکل نہیں اگر گروپ 5+1 میں خلل ڈالنے والے اس کے قوانین پر واپس آئے.
انہوں نے کہا کہ نیویارک میں 4+1 ممالک کے درمیان نشست منعقد کی گئی جو 5+1 ہوسکا تھا.
صدر روحانی نے کہا کہ ان کے حالیہ کامیاب دورہ نیو یارک کی بدولت اینٹی ایران لابی کو شکست ہوئی کیونکہ مخالفین ایران کا پرامن چہرہ مسخ کرنے کے درپے تھے مگر ہم نے انھیں ہرمز امن منصوبے کے ذریعے ناکام بنادیا.
انہوں نے کہا کہ ہمیں دورے نیویارک پر پتہ چلا کہ دشمن کی سازش شکست کا سامنا اور صورتحال میں تبدیلی ہوگئی کیوکنہ اسلامی جمہوریہ ایران نے اقوام متحدہ کی نشست میں سلامتی کا مطالبہ کرتے ہوئے ہرمز امن منصوبے کو پیش کیا.

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
9 + 6 =