ایران دوسروں سے زیادہ خلیج‌فارس میں امن چاہتا ہے: جنرل‌باقری

 بیجنگ، ارنا-  اسلامی جمہوریہ ایران کی مسلح افواج کے سربراہ نے کہا ہے کہ ایران، دوسرے ممالک سے کہیں زیادہ خلیج فارس اور آبنائے ہرمز میں قیام امن کا خواہاں ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ اسلامی جمہوریہ ایران کو کسی بھی ملک کیساتھ تناؤ اور فوجی تصادم پر کوئی دلچسبی نہیں ہے لیکن ہم علاقے کی سلامتی کو خطرے میں ڈالنے والے ہر کسی اقدام کا مقابلہ کریں گے۔

ان خیالات کا اظہار میجر جنرل "محمد باقری" نے ہانگ کانگ فینکس ٹی وی کیساتھ انٹرویو دیتے ہوئے کیا۔

انہوں نے اس انٹرویو کے دوران، خطی اور بین الاقوامی مسائل سے متعلق ایران کے مواقف کی وضاحت کرتے ہوئے کہا کہ ہم  پوری قدرت سے اپنے مقاصد کا تعاقب کریں گے۔

ایرانی سپہ سالار نے اپنے حالیہ دورہ چین کو مثالی قرار دیتے ہوئے امریکی مشتعل انگیز اقدامات کے پیش نظرعلاقائی سلامتی سے متعلق چین کیساتھ مذاکرات اور باہمی مشاورت کی ضرورت پر زور دیا۔

انہوں نے مشرق وسطی اور خلیج فارس کی صورتحال پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ اسلامی جمہوریہ ایران خطے اور دنیا کے کسی اور کونے میں جنگ کا خواہاں نہیں ہے۔

جنرل باقری نے کہا کہ اسلامی جمہوریہ ایران بدستور امن کا خواہاں ہے اور ہم، کبھی مشتعل انگیز اقدامات یا کہ جنگ کا آغاز کرنے والے نہیں تھے لیکن اپنی سرزمین کیخلاف دوسروں کی جارحیت کا دفاع کیا ہے۔

ایران کی مسلح افواج کے سربراہ نے کہا ہے کہ ایران، دوسرے ممالک سے کہیں زیادہ خلیج فارس اور آبنائے ہرمز میں قیام امن کا خواہاں ہے کیونکہ ہم اپنے آئل اور نان ائل مصنوعات کو آبنائے ہرمز کے ذریعے برآمدات کرتے ہیں۔

انہوں نے مزید کہا کہ لہذا ہم خلیج فارس، بحیرہ عمان اور آبنائے ہرمز میں عدم استحکام پھیلانے والے اقدمات کیخلاف بھر پور طاقت کیساتھ مقابلہ کریں گے۔

*274**9467
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
5 + 10 =