ایشیائی ممالک کے ساتھ تعلقات بڑھانا ایران کی پہلی ترجیح ہے: روحانی

تہران، ارنا – ایرانی صدر مملکت نے کہا ہے کہ ایشیائی ممالک خاص طور پر سنگاپور کے ساتھ تعلقات بڑھانا ایران کی پہلی ترجیح ہے.

ان خیالات کا اظہار 'حسن روحانی' نے آج بروز منگل یریوان میں سنگاپور کے وزیر اعظم "لی هسین لونگ " کے ساتھ ایک ملاقات کے دوران گفتگو کرتے ہوئے کہی.

انہوں نے دونوں ممالک کے درمیان تعلقات کو مثبت اور تعمیری قرار دیتے ہوئے کہا کہ ایران اور سنگاپور کے درمیان موجودہ صلاحیتوں کے باوجود ہمیں دونوں ممالک کے درمیان باہمی تجارتی تعلقات کو مزید بڑھانے کی کوشش کرنی چاہیے.

انہوں نے یوریشین اقتصادی یونین کے ساتھ ایران اور سنگاپور کے روابط کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ یہ تعلقات، دونوں ممالک کے درمیان باہمی روابط خاص طور پر اقتصادی تعلقات کے فروغ کے لیے ایک اچھا موقع ہوسکتے ہیں.

روحانی نے کہا کہ ایران خلیج فارس اور مشرق وسطی میں امن، سلامتی اور تعاون کا خواہاں ہے اور ایران کی جانب سے 'ہرمز امن منصوبہ' کی تجویز پیش کرنا اسی مقصد کے لیے ہے.

انہوں نے کہا کہ ہمیں اس بات پر یقین ہیں کہ علاقائی مسائل کا حل مذاکرات اور سیاسی ہے نہ فوجی.

روحانی نے کہا کہ ایران کو منشیات اور منظم یافتہ جرائم سے نمٹنے کے شعبے میں قابل قدر تجربات ہیں اسی لیے یہ ملک دوسرے ممالک کے تعاون سے دہشتگردی گروپوں کے ساتھ مقابلہ کے لیے آمادہ ہے.

اس موقع میں سنگاپور کے وزیر اعظم نے ایران اور سنگاپور کے درمیان دوستانہ اور تعمیری تعلقات کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ ہم تہران کے ساتھ باہمی تعلقات کو مزید مضبوط بنانے کے خواہاں ہیں.

تفصیلات کے مطابق، تفصیلات کے مطابق ڈاکٹر"حسن روحانی"، پیر کے روز آرمینی وزیر اعظم "نیکول پاشینیان" کی با ضابطہ دعوت پر یوریشن اقتصادی یونین میں شرکت کیلئے دارالحکومت یروان کے دورے پر روانہ ہوگئے۔

9410*274**
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
8 + 0 =