علاقائی ملکوں کو غیرملکی مداخلت کی ضرورت نہیں: ایرانی سفیر

اسلام آباد، ارنا - پاکستان میں تعینات اسلامی جمہوریہ ایران کے سفیر نے کہا ہے کہ علاقائی ممالک آپس کے مسائل کو خوش اسلوبی کے ساتھ حل کرنے اور بہتر تعاون کے لئے اچھی صلاحیت رکھتے ہیں لہذا انھیں اغیار بالخصوص غیرملکی فورسز کی مداخلت کی ہرگز ضرورت نہیں ہے.

ان خیالات کا اظہار «مہدی ہنردوست» نے ہفتہ کے روز پاکستانی دارالحکومت اسلام آباد میں ایک روزہ سمینار سے خطاب کرتے ہوئے کیا جس کا عنوان بحر ہند خطے کو درپیش جوہری مسائل اور امن و استحکام تھا.
اس سمینار کا انعقاد ساؤتھ ایشین اسٹریٹجک اسٹیبلیٹی انسٹیٹیوٹ کیجانب سے کیا گیا تھا جہاں ایرانی سفیر نے خصوصی خطاب کے علاوہ مختلف امور سے متعلق سوالات کے جواب بھی دئے.
اس موقع پر انہوں نے مزید کہا کہ علاقائی تعاون سے ہی خطے کے مسائل پر قابو پایا جاسکتا ہے اور یہاں بیرونی فورسز کی مداخلت کی کوئی گنجائش نہیں ہے.
ہنردوست نے کہا کہ خطی ممالک خاص طور سے خلیج فارس کے ملکوں کے درمیان تعاون اور رابطوں کا فقدان ایک بہت بڑا مسئلہ ہے. افسوس کے ساتھ کہنا پڑتا ہے کہ طے شدہ منصوبہ بندی کے تحت اسلام فوبیا اور ایران فوبیا جیسی سازشوں کو خطے اور دنیا میں فروغ دیا جارہا ہے.
انہوں نے اس بات پر زور دیا کہ ہمیں بہانہ بازی کے بجائے ایک دوسرے سے براہ راست اور شفاف طریقے سے بات چیت کرکے خطے کے وسائل کا حل نکالنا پڑے گا.
ایرانی سفیر نے خطے میں پاک ایران تزویراتی تعاون کی اہمیت کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ دونوں ممالک انسانی اور منشیات اسمگلنگ کے راستے میں موجود ہیں اور اس کے علاوہ ایران اور پاکستان دہشتگردی اور غیرملکی مداخلت کے شکار بھی ہیں.
انہوں نے مزید کہا کہ ایران اور پاکستان بہتر رابطے کی صلاحیت رکھتے ہیں اور ہم اپنے برادر اور ہمسایہ ملک پاکستان کے ساتھ ہر طرح کے تعاون کے لئے تیار ہیں.
مہدی ہنردوست نے کہا کہ پاک ایران گیس پائپ لائن منصوبہ پاکستان کی معیشت کا چہرہ بدل سکتا ہے. ایران است وقت پاکستان کو 104 میگاواٹ کی بجلی ترسیل کررہا ہے تاہم ایران بجلی برآمدات کے مقدار کو 3 ہزار میگاواٹ تک لے جانے کے لئے آمادہ ہیں.
274**
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
6 + 6 =