نیتن یاہو کے ہوتے ہوئے امریکہ کو کسی دشمن کی ضرورت نہیں: ظریف

تہران - ایرانی وزیر خارجہ نے کہا ہے کہ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے قریبی ساتھی نیتن یاہو کے ہوتے ہوئے امریکیوں کو کسی اور دشمن کی ضرورت نہیں.

"محمد جواد ظریف" نے ایک ٹوئٹر پیغام میں صہیونی وزیر اعظم کی جانب سے امریکہ کے خلاف جاسوسی سے متعلق شائع ہونے والی رپورٹس پر روشنی ڈالی. 

انہوں نے مزید لکھا ہے کہ جب نیتن یاہو جو امریکہ کا قریبی شخص ہے، جاسوسی سرگرمیوں کے لئے امریکہ کو بھی نہیں چھوڑتا تو یہ بات ظاہر ہوتی ہے کہ امریکہ کو کسی اور دشمن کی ضرورت نہیں. 

ظریف نے مزید کہا کہ ٹرمپ صاحب، ٹیم-بی کا ایک رکن جو امریکہ کا قریبی ہے، اس نے تو امریکہ کو بھی نہیں چھوڑا اور اس کی جیب پہ نہ صرف ڈاکا ڈلا بلکہ  امریکی صدر کے خلاف جاسوسی میں بھی ملوث ہے.

واضح رہے کہ امریکی حکومت کے تین سابق عہدیداروں  نے شناخت ظاہر نہ کرنے کی شرط پر خبر رساں ادارے  پولیٹیکو کو بتایا تھا کہ کچھ عرصہ قبل وہائٹ ہاؤس اور واشنگٹن ڈی سی میں دیگر مقامات کے آس پاس پائے جانے والے جاسوس آلات کے پیچھے ناجائز صہیونی ریاست کا ہاتھ ہے جس کا مقصد صدر ڈونلڈ ٹرمپ اور ان کے مشیروں کی جاسوسی کرنا ہےتھا۔

ادھر ناجائز صہیونی ریاست کے وزیر اعظم بنیامین نیتن یاہو نے اس خبر کی پرزور تردید کی ہے کہ ان کا ملک امریکہ کی جاسوسی کر رہا تھا۔
*274**9467
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
2 + 0 =