چین نیشنل ڈیفنس یونیورسٹی سے تجربات کے تبادلہ پر تیار ہیں: ایرانی سپہ سالار

بیجنگ، ارنا- ایرانی مسلح افواج کے سربراہ نے کہا ہے کہ ہم دونوں ملکوں کے درمیان دفاعی تعلقات کے فروغ کیلئے ایران اور چین کی نیشنل ڈیفنس یونیورسٹیوں کے درمیان تجربات کے تبادلہ پر تیار ہیں۔

یہ بات چین کے دورے پر آئے ہوئے میجر جنرل "محمد باقری" نے جمعرات کے روز چین کی نیشنل ڈیفنس یونیورسٹی کے سربراہ کیساتھ ایک ملاقات میں گفتگو کرتے ہوئے کہی۔ 
انہوں نے مزید کہا کہ گزشتہ چند سالوں کے دوران دونوں ملکوں کے درمیان تعلقات، اسٹریٹجک تعلقات کی شکل اختیار کرگئے ہیں اور آئے دن ان بہتری نظر آر رہی ہے۔
میجر جنرل باقری نے مزید کہا کہ ایران اور چین کی مسلح افواج کے درمیان مختلف شعبوں بالخصوص تریننگ کے حوالے سے اچھے تعلقات ہیں۔
انہوں نے مزید کہا کہ دنیا تبدیلی کی طرف گامزن ہے اور تمام ممالک کو بہت ساری چیلنجز کا سامنا ہے جن کو تحقیق اور جائزہ لینے کی ضرورت ہے اور یونیورسٹی تحقیق اور ریسرچ کرنے کیلئے بہترین آپشن ہے۔
 اس موقع پر چین کی نیشنل ڈیفنس یورنیورسٹی کے سربراہ "وو جیمنگ" نے کہا کہ ایران اور چین کے درمیان اچھے اور تعمیری تعلقات، خطے اور دنیا میں قیام امن و استحکام کا باعث ہوگا۔
انہوں نے کہا کہ دونوں ملکوں کے درمیان اچھے تعلقات ایران اور چین کے مفادات میں ہیں لہذا بیجنگ، تہران کیساتھ تعلقات کے فروغ کا خواہاں ہے۔
انہوں نے کہا کہ دونوں ممالک کے مابین سیاسی تعلقات کی ترقی اور تقویت کے ساتھ  ساتھ ایران اور چین کی مسلح افواج کے تعلقات میں بھی اچھی ترقی اور پیشرفت نظر آئی ہے۔ 
وو جیمنگ نے ایران اور چین کی نیشنل ڈیفنس یونیورسٹیوں کے درمیان تجربات کے تبادلہ کا خیر مقدم کیا۔
**9467
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
7 + 4 =