11 ستمبر، 2019 6:29 PM
Journalist ID: 1917
News Code: 83472414
0 Persons
جان بولٹن کو عہدے سے برطرفی پر ظریف کا رد عمل

تہران، ارنا-  اسلامی جمہوریہ ایران کے وزیر خارجہ نے امریکی قومی سلامتی مشیر کو عہدے سے ہٹانے پر اپنے رد عمل کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ جنگ کی خواہش اور مزید دباؤ ڈالنے کو بھی جنگی جنون بھڑکانے والوں کے سرکردہ کیساتھ جانا ہوگا۔

"محمد جواد ظریف" نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ میں اپنے ایک ٹوئٹر پیغام میں امریکہ کیجانب سے ایران کیخلاف معاشی دہشتگردی میں مزید اضافہ کرنے کی شدید مذمت کی-

انہوں نے مزید کہا کہ ایک ایسے وقت جب دنیا – سوائے تین یا کہ دو خوفزدہ ساتھیوں کے-  بی ٹیم کے آلہ کار سرکردہ کی برطرفی سے ایک آسان سانس لینا چاہتے تھے تو وزیر خارجہ پمپیو اور امریکی وزیر خزانہ اسٹیفن منوچن نے ایران کیخلاف معاشی دہشتگردی میں مزید اضافے کا اعلان کردیا۔

ایرانی وزیر خارجہ نے اس بات پر زور دیا کہ جنگ کی خواہش اور مزید دباؤ ڈالنے کو بھی جنگی جنون بھڑکانے والوں کے سرکردہ کیساتھ جانا ہوگا۔

واضح رہے کہ امریکی وزیر خارجہ اور وزیر خزانہ نے گزشتہ روز ایران میں نام نہاد دہشتگرد گروہوں کیخلاف نئی پابندیاں لگانے کا اعلان کردیا۔

 یہ بات بھی قابل ذکر ہے کہ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے گزشتہ رات، جان بولٹن کو مشیر قومی سلامتی امور کے عہدے سے برطرف کرنے کا اعلان کرتے ہوئے لکھا کہ گزشتہ رات جان بولٹن کو آگاہ کیا تھا کہ انہیں عہدےسے ہٹایا جارہا ہے۔

امریکی صدر نے لکھا کہ متعدد معاملات میں مجھے جان بولٹن کی تجاویز سے شدید اختلاف تھا، انہیں بتا دیا گیا ہے کہ وائٹ ہاؤس میں ان کی مزید ضرورت نہیں ہے۔ امریکی صدر نے لکھا کہ قومی سلامتی کے نئے مشیر کا اعلان آئندہ ہفتے کروں گا۔
**9467
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
8 + 10 =