جوہری معاہدے کے وعدوں کو کم کرنے کا تیسرا فیصلہ اہم قدم تھا: ایرانی صدر

تہران، ارنا - صدر اسلامی جمہوریہ ایران نے مغربی وعدہ خلافی کے جواب میں جوہری معاہدے کے وعدوں کو کم کرنے کے تیسرے فیصلے کو اہم قرار دیتے ہوئے خبردار کیا ہے کہ ایران، مستقبل میں بھی ایسا قدم اٹھانے کے لئے آمادہ ہے.

"حسن روحانی" نے بدھ کے روز جوہری وعدوں کی کمی کے تیسرے اقدام کی اہمیت کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ یہ فیصلہ دوسرے دو اقدامات سے موازنہ نہیں ہے۔
یاد رہے کہ صدر روحانی نے جمعہ کے روز سے جوہری وعدوں کی کمی کے تیسرے مرحلے کے نفاذ کا حکم دیتے ہوئے اس بات پر زور دیا کہ جوہری ٹیکنالوجی سے متعلق جتنی ترقی اور ریسرچ کی ضرورت پڑی تو قومی ادارہ برائے جوہری امور اس کو یقینی بنائے گا.
اسلامی جمہوریہ ایران کو تیسرے مرحلے میں IR6 سینٹری فیوجز کی بنانے والی 20 زنجیروں میں گیس انجکشن کا آغاز کردیا گیا۔
امریکہ کو عسکریت پسندی اور بڑھتے ہوئے دباؤ ترک کرنا ہوگا
ایرانی صدر نے اس بات پر زور دیا کہ امریکہ کو جاں لینا چاہئیے کہ عسکریت پسندی میں کوئی فائدہ نہیں ہے اور عسکریت پسندی اور بڑھتے ہوئے دباؤ ترک کرنا ہوگا۔
انہوں نے کہا کہ اسلامی جمہوریہ ایران کی منطق جوہری پرامن ٹیکنالوجی سے استعمال کرنا ہے اور اگر جوہری معاہدے کے دوسرے فریقین اپنے وعدوں پر عملدرآمد کریں تو ہم بھی اپنے وعدوں کے مطابق عمل کریں گے اور اگر نامکمل عمل کریں ہم بھی ایسا کریں گے۔
274٭9393٭٭
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
6 + 11 =