جنرل باقری کا دورہ بیجنگ، ایران چین فوجی، دفاعی تعلقات میں نئے باب کا آغاز

بیجنگ، ارنا – ایرانی مسلح افواج کے سربراہ میجر جنرل "محمد باقری" اپنے اعلی سطح وفد کے ساتھ چینی آرمی چیف کی دعوت کی بناپر فوجی، دفاعی سفارتکاری حکمت عملی کے تحت اس ملک کے دورے پر ہیں جسے دونوں ممالک کے درمیان باہمی تعلقات کے لئے نئے باب کا آغاز ہے۔

ایرانی اور چینی حکام کے مابین دوروں کے بعد جنرل باقری کے دورے چین کا مقصد دونوں ممالک کے درمیان دیرینہ تعلقات کے فریم ورک میں فوجی، دفاعی باہمی تعاون بڑھانا ہے۔
جنرل باقری اس دورے کے موقع پر چینی دفاعی اور فوجی حکام کے ساتھ دو طرفہ ملاقات میں علاقائی، عالمی اور دوطرفہ مسائل پر بات چیت کریں گے۔

اسلامی جمہوریہ ایران اور چین منطق کی مبنی پر مختلف شعبوں میں دوطرفہ تعلقات کو فروغ دینے کے لئے کوشش کر رہے ہیں حتی ایران مخالف امریکی ظالمانہ پابندیاں فوجی دفاعی باہمی تعاون بڑھانے پر کوئی رکاوٹ نہیں بن سکی۔
2016 کو ایران اور چین کے درمیان فوجی اور دفاعی باہمی تعاون بڑھانے کے معاہدے پر دستخط کرنا دنوں ملکوں کے درمیان عصر حاضر کی ایک اہم پیشرفت میں سے ایک ہے۔ اس وقت کے چینی وزیر دفاع بڑیگڈئیر جنرل "چانگ وانگ" اس معاہدے پر دستخط کرنے کو دوطرفہ تعلقات کے استحکام کی اصلی وجہ قرار دے دیا۔

اسلامی جمہوریہ ایران اور چین کے درمیان مشترکہ فوجی کمیشن کا قیام جنرل باقری کے دورے چین کے مقاصد میں سے ایک ہے۔
دونوں ممالک کے حکام یقین رکھتے ہیں کہ دوطرفہ تعلقات کو فروغ دینا علاقے میں پائیدار امن اور سلامتی کا باعث بن سکتا ہے۔

علاقے اور دنیا کی نئی صورتحال میں جنرل باقری کے دورے چین میں عالمی برادری کے لئے ایک واضح پیغام ہے جو دونوں ممالک کے درمیان مستحکم اور گہرے تعلقات باہمی بھروسہ اور قومی مفادات کی مبنی پر ہے اور مختلف میدانوں میں ہمیشہ ایک دوسرے کی حمایت کر رہے ہیں۔

جنرل باقری اس ملک کے دورے کے موقع پر چینی اسٹریٹجک حکام کے ساتھ ملاقات، صنعتی سنٹرز کے دورے کے علاوہ چینی قومی دفاع کی یونیورسٹی میں سائنسی اور فوجی ماہروں کے لئے تقریر کریں گے۔
منصوبہ بندی پروگراموں کے مطابق، قریب مستقبل میں انڈین اوشین کے شمالی علاقے میں اسلامی جمہوریہ ایران، چین اور روس کے درمیان مشترکہ مشق کا انعقاد کیا جائے گا۔
جنرل باقری کے دورے چین دونوں ممالک کے درمیان فوجی اور اسٹریٹجک تعلقات کے لئے ایک اہم سنگ میل ثابت ہوگا اور مختلف شعبوں میں دفاعی اور سلامتی تعلقات کی ترقی کا باعث بن سکتا ہے۔
میجر جنرل باقری ایک اسٹریٹجک ماہر کے طور پر اسلامی جمہوریہ ایران کی خارجہ پالیسی میں اہم پوزیشن کے صاحب ہیں اور ان کے مطابق، چین عالمی اور علاقائی مسائل میں اہم کردار ادا کرسکتا ہے۔

9393**

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
7 + 11 =