جوہری معاہدہ یکطرفہ سڑک نہیں ہے: ایرانی ایٹمی ادرارے کا سربراہ

تہران، ارنا – ایرانی کے جوہری ادارے کے سربراہ نے کہا ہے کہ ایران جوہری معاہدہ یک طرفہ سڑک نہیں بلکہ دوطرفہ سڑک ہے اور یقینا اسلامی جمہوریہ ایران مناسب وقت پر صحیح فیصلے کرے گا.

یہ بات سید علی اکبر صالحی نے اتوار کے روز ایران کے دورے پر آئے ہوئے اقوام متحدہ کے عالمی ایٹمی ادارے کے عبوری ڈائریکٹر جنرل «کورنل فیروٹا' کے ساتھ ایک ملاقات کے دوران گفتگو کرتے ہوئے کہی.

اعلی ایرانی جوہری عہدیدار نے مزید کہا کہ جیسا کہ ہم نے ایٹمی معاہدے پر علمدرآمد کی سطح میں کمی کے لیے تیسرے اقدام کو اٹھایا ویسا بھی مناسب وقت میں صحیح فیصلہ کریں گے.

انہوں نے کہا کہ یورپی یونین جس نے جوہری معاہدے سے امریکہ کی علیحدگی کے بعد اپنے فرائض پر مکمل طور پر عمل کرنا چاہتا تھا بدقسمتی سے ابھی بھی جیسا کہ اس نے وعدہ کیا تھا، اپنی ذمہ داریوں کو پورا نہیں کیا ہے.

انہوں نے کہا کہ اس سے بھی بدتر بات یہ ہے کہ یورپی یونین کے ترجمان نے کہا ہے کہ 'ہم جب تک ایران اس معاہدے پر پابند رہے تب تک اس سمجھوتے میں رہیں گے'.

ایران کے ایٹمی ادارے کے سربراہ نے یورپی یونین کے ترجمان کے کہنے پر افسوس کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ یورپ نے اس وقت اپنے وعدوں پر من و عن عملدرآمد نہیں کیا ہے.

اس موقع پر عالمی جوہری ادارے کے عبوری سربراہ نے کہا ہے کہ اقوام متحدہ کی ذیلی تنظیم انٹرنیشنل اٹامک انرجی ایجنسی (آئی اے ای ای) اپنے غیرجانبدارانہ اور پیشہ ورانہ رویے کو جاری رکھے گی اور یہ اس ایجنسی کی ساکھ کے فروغ کا باعث ہے.

انہوں نے کہا کہ ہم ایران کے ساتھ باہمی تعلقات کو مزید فروغ دینے کے خواہاں ہیں اور یہ ایجنسی اس شعبے میں دبا‎ؤ سے متاثر نہیں ہو گی.

9410٭274٭٭

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
5 + 6 =