اقوام متحدہ نے ادویات کے شعبے میں ایران کیخلاف پابندیوں پر خاموشی توڑدی

تہران، ارنا- امریکی حکام کا دعوی ہے کہ ایران کیخلاف لگائی گئی پابندیوں کا عام لوگوں اور بیماروں پر کوئی اثر نہیں پڑتا جبکہ سربراہ اقوام متحدہ نے پابندیوں کی وجہ سے ایرانی بیماروں کو ادویات تک رسائی میں مشکلات کا سامنا کرنے پر خبردار کیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق امریکی محکمہ خزانہ نے گزشتہ مہینے کے دوران ایک ویڈیو شائع کی جس میں ایرانی عوام کو مخاطب کیا تھا اس ویڈیو میں امریکی خصوصی نمائندہ برائے امور ایران "برایان ہوک" نے دعوی کیا تھا کہ یہ ایک وہم ہے کہ ایران مخالف امریکی پابندیوں نے ایرانی عوام کو ادویات تک رسائی کا نشانہ بنایا ہے۔

ایک ایسے وقت جب امریکی حکام نے صحت اور ادویات کے شعبے پر پابندیوں کے بُرے اثرات کو وہم قرار دے دیا ہے دوسری طرف اقوام متحدہ کے سیکرٹری جنرل "انٹونیو گوترش" نے اس حوالے سے اپنی خاموشی توڑ دی۔

انہوں نے 5 ستمبر کو انسانی حقوق کے حوالے سے اپنی پیش کی گئی رپورٹ میں کہا تھا کہ انسانی حقوق کی تنظیموں نے ایران مخالف امریکی پابندیوں اور ایرانی بینکوں کی سرگرمیوں کو محدود کرنے کی وجہ سے ایران میں ادویات اور طبی سہولیات کی پیدواری اور رسائی پر بُرے اثرات مرتب کرنے پر اپنے خدشات کا اظہار کردیا ہے۔

سربراہ اقوام متحدہ نے اس بات پر زور دیا تھا کہ ادویات کی قیمتوں میں ڈرامائی اضافہ اور موجودہ اسٹاک کی کمی کے ساتھ ساتھ کرپشن کا خطرہ اور ادویات کی صنعت کی ترقی میں رکاوٹیں بھی ایران میں صحت اور ادویات کے شعبے کو بُری طرح متاثر کرسکتے ہیں جس کی خاطر لوگ صحت کے حق سے محروم ہوجائیں گے۔

یہ بات قابل ذکر ہے کہ ایران اپنی 97 فیصد ادویات کی ضروریات کو ملک کے اندر سے پورا کرتا ہے مگر ان میں سے 50 فیصد ادویات کی تیاری کرنے کے لئے بنیادی چیزیں باہر سے منگوانی پڑتی ہیں کیونکہ ایک دوائی کو بنانے کے لئے کئی قسم کی چیزوں کی ضرورت پڑتی ہے.

بعض ادویات اور ویکسین بالخصوص لاعلاج بیماریوں کے لئے مہنگی دوائیں کی پیداواری کا معاشی جواز نہیں ہے لہذا رقم کی منتقلی کے لئے درآمدات اور مالیاتی طریقہ کار کی ضرورت ہے۔

ادویات کی وصولی کے لئے قائم ہونے والے مالیاتی چینلز نے ابھی تک کوئی کارکردگی کا مظاہرہ نہیں کیا ہے حتی انسٹیکس مالیاتی نظام بھی دوائیں کے مسائل کے حل کے لئے مددگار نہیں ثابت ہوگیا.

اگر مغربی دنیا ادویات پابندیوں کی وجہ سے ایرانی حکام کے استقامت کو منظور نہیں کرتی ہے تو ان پابندیوں کے نتیجے میں بیماروں کے لئے پیش آنے والے مشکلات کو انکار نہیں کرسکتی ہے.
**9467
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
4 + 0 =