جوہری سرگرمیوں تک عالمی معائنہ کاروں کی رسائی محدود نہیں ہوگی: ایران

تہران، ارنا - اسلامی جمہوریہ ایران کے قومی ادارہ جوہری امور کے ترجمان نے کہا ہے ملک میں جوہری سرگرمیوں تک عالمی ایٹمی توانائی ایجنسی کے معائنہ کاروں کی رسائی محدود نہیں ہوگی.

یہ بات "بہروز کمالوندی" نے ہفتہ کے روز ایک پریس کانفرس میں گفتگو کرتے ہوئے کہی.
اس موقع پر انہوں نے کہا کہ جوہری معاہدے کے وعدوں میں کمی لانے کے لئے ایران کا تیسرا فیصلہ جوہری ٹیکنالوجی کی ترقی اور ریسرچ کی تبدیلیوں سے متعلق ہے.
کمالوندی نے تیسرے مرحلے کی تفصیلات کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ ہمیں ارادہ ہے کہ جوہری سرگرمیوں میں سچائی اور شفافیت حاصل کرنا اور جوہری سائٹوں تک عالمی ایٹمی توانائ ایجنسی کے معائنہ کاروں کی رسائی محدود نہیں ہوگی.

انہوں نے کہا کہ گزشتہ روز سے IR6 سینٹری فیوجز کی بنانے والی 20 زنجیروں میں گیس انجکشن کا آغاز کردیا گیا، یہ اقدام جوہری معاہدے پر دستخط کرنے کے 11 سال کے بعد اٹھانا جانا تھا مگر فریقین کی بدعہدی کی وجہ سے ہم نے گزشتہ روز سے اس اقدام کا آغاز کردیا ہے.
انہوں نے کہا کہ IR6 سینٹری فیوجز کی بنانے والی 30 زنجیروں میں بھی گیس انجکشن دوسرے مرحلوں میں ہوگا.
ایرانی ایٹمی توانائی ادارے کے ترجمان نے کہا کہ اس اقدام کو گزشتہ روز سے آغاز اور آج عالمی ایٹمی توانائی ایجنسی کا اعلان کردیا گیا.
انہوں نے کہا کہ یہ اقدام اسلامی جمہوریہ ایران میں یورینیم کی افزودگی کی سطح میں اضافہ ہونے کا باعث بنے گا.

کمالوندی نے مزید کہا ہے کہ اگر دوسرے فریق اپنے وعدوں پر عمل کرے تو ایران بھی اپنے وعدوں پر واپس جائے گا دوسری صورت میں صورتحال مزید سخت ہوگی.
انہوں نے کہا کہ جوہری معاہدے کے فریقین جاں لیں کہ ان کے پاس وقت زیادہ نہیں لہذا اگر وہ اقدامات اٹھانا چاہتے ہیں تو انھیں جلد کام کرنا ہوگا.
انہوں نے مزید کہا کہ یورینیم کی 20 فیصد افزودگی کے لئے 4.5 فیصد افزودہ شدہ یورینیم کے ذخائر کو ہوگا تاہم ایران میں نہ صرف یورینیم کی 20 فیصد افزودگی بلکہ 20 فیصد سے زیادہ صلاحیت موجود ہے.
انہوں نے مزید کہا کہ فی الحال ہمیں یورینیم کی 20 فیصد افزودگی کی کی ضرورت نہیں بلکہ ہم 5۔4 فیصد یورینیم افزودگی سے اپنی ضروریات کو پورا کریں گے.
274*9393**

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
7 + 7 =