سربراہ اقوام متحدہ کی ایرانی قوم پر پابندیوں کے منفی اثرات کی تصدیق

نیو یارک، ارنا - سیکریٹری جنرل اقوام متحدہ نے ایران سے متعلق انسانی حقوق کی ایک رپورٹ میں امریکہ کی یکطرفہ پابندیوں سے ایرانی عوام کو درپیش مشکلات اور اس کے منفی اثرات کی تصدیق کردی.

انٹونیو گوٹیرش نے مزید کہا ہے کہ امریکی پابندیوں سے ایران میں انسانی ہمدردی کی بنیاد سے متعلق اقدامات پر منفی اثرات مرتب ہوئے ہیں.
یہ پہلی مرتبہ ہے کہ سیکریٹری جنرل اقوام متحدہ ایران مخالف امریکی پابندیوں کے منفی اثرات کی تصدیق کررہے ہیں.
انہوں نے اپنی رپورٹ میں مزید کہا ہے کہ امریکہ نے گزشتہ 22 اپریل کو ایرانی تیل کی خریداری کے لئے استثنی ختم کرنے کے بعد اس میں توثیق نہیں کی بلکہ خریدار ممالک کو بھی دھمکیاں دیں.
انہوں نے مزید کہا کہ امریکی حکام کے مطابق، مئی 2018 سے ایران پابندیوں کے نتیجے میں اپنے تیل کی 10 ارب ڈالر آمدنی حاصل نہیں کرسکا ہے.
انہوں نے کہا کہ امریکی پابندیوں سے ایران کی جانب پناہ گزینوں کی میزبانی کی سرگرمیوں پر بھی منفی اثرات مرتب ہورہے ہیں.
گوٹیرش نے مزید کہا ہے کہ ایران مخالف پابندیوں سے وہاں کے افراط زر میں 50 فیصد تک اضافہ ہوا جو 1980 کے بعد بہت زیادہ ہے.
انہوں نے کہا کہ جوہری معاہدے کے نفاذ کے بعد بعض عالمی مالیاتی اداروں نے 2016 میں ایران کے ساتھ تعاون کا آغاز کیا مگر اس وقت ان اداروں کی جانب سے دوطرفہ تعاون کو منقطع کیا گیا ہے.
انہوں نے کہا کہ انسانی حقوق کی تنظیموں نے اپنی تشویش کا اظہار کیا کہ پابندیاں اور بینکاری رکاوٹیں غیرقانونی طور پر ادویات کی پیداواری، دستیابی اور تقسیم، طبی سازو سامان کی تیاری پر منفی اثرات پڑسکتی ہیں۔
274٭9393٭٭
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
2 + 1 =