خلیج فارس کی سلامتی علاقائی ممالک کے تعاون پر منحصر ہے: ظریف

جکارتہ، ارنا - ایرانی وزیر خارجہ نے اس بات پر زور دیا ہے کہ خلیج فارس میں سلامتی کا قیام صرف اسی علاقے میں موجود ممالک کے درمیان تعاون اور ہم آہنگی سے ممکن ہے.

یہ بات محمد جواد ظریف نے دورہ انڈونیشیا کے موقع پر خاتون ہم منصب کے ساتھ ملاقات کے بعد صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہی.

اس موقع پر انہوں نے کہا کہ گزشتہ صدیوں سے علاقائی ممالک نے خلیج فارس کی سلامتی کو فراہم کیا ہے آج بھی ان ممالک کے درمیان باہمی تعاون کے بغیر خلیج فارس کی سیکورٹی قائم نہیں ہوگی۔
ظریف نے ایران اور انڈونیشیا کے درمیان مسئلہ فلسطین پر مشترکہ مواقف کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ بیت المقدس مسلمانوں کا پہلہ قبلہ ہے اور اس حوالے سے دونوں ممالک کے مقاصد مشترک ہیں۔
تفصیلات کے مطابق، ایرانی وزیر خارجہ نے جمعہ کے روز جکارتہ کے دورے کے موقع پر اپنی انڈونیشن خاتون ہم منصب کے ساتھ ملاقات کی۔
فریقین نے اس ملاقات کے دوران جوہری معاہدے کے تحفظ، مسئلہ فلسطین، علاقائی مسائل، دوطرفہ تعلقات، سیاسی، اقتصادی اور پارلیمانی شعبوں میں باہمی تعاون پر تبادلہ خیال کیا۔
274٭9393٭٭
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
6 + 0 =