علاقائی سلامتی کو باہر سے خریدا نہیں جاسکتا: ایرانی وزیرخارجہ

ڈھاکہ، ارنا - ایرانی وزیر خارجہ نے کہا ہے کہ انڈین اوشین کے فورم سے خطاب کرتے ہوئے کہا ہے کہ معاشی ترقی کے لئے خطے میں امن و سلامتی ناگزیر ہے تاہم علاقائی سلامتی کو باہر سے خریدار نہیں جاسکتا.

یہ بات محمد جواد ظریف نے انڈین اوشین ایسوسی ایشن (IORA) کے تیسرے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہی جس کا انعقاد بنگلہ دیش کے دارالحکومت ڈھاکہ میں ہوا.

انہوں نے مزید کہا کہ اسلامی جمہوریہ ایران کی نظر میں علاقائی ممالک میں ہی خطی سلامتی کو یقینی بنانے کے لئے صلاحیت موجود ہے اور وہ اس اثاثے کی رکھوالی کرسکتے ہیں.
انہوں نے یہ خبردار کیا کہ اگر کوئی سلامتی کو باہر سے خریدنے کے نظریے پر قائم رہا تو خطے میں فوجی اڈوں کی تعداد میں اضافہ ہوگا.
ظریف نے کہا کہ ہمارے مستقبل سمندروں اور اوشینز پر منحصر ہیں اور انڈین اوشین بہت سی صلاحیتیں کا صاحب ہے جن سے دوسرے ممالک کو فائدہ اٹھانا ہوگا۔
انہوں نے کہا کہ انڈین اوشین کھانے سیکورٹی اور اس کے ممالک کی بہبودی اور ترقی کے لئے اہم کردار ادا کر رہا ہے اور کھانے اور شپنگ کی سیکورٹی کی فراہمی اہم ترجیح ہے۔
ایرانی وزیر خارجہ نے کہا کہ انڈین اوشین مختلف مشکلات سمیت انسان، منشیات اور بندوق کی اسمگلنگ، غیر قانونی ماہی گیری ، آلودگی اور سمندری وسائل کا غیر قانونی استحصال کا شکار ہے لہذا اس کی سلامتی اور استحکام ہمارے لئے بہت ہی اہم ہے۔
انہوں نے کہا کہ یک طرفہ اور انتہاپسندی اقدامات، مسلح کشتیوں کی پالیسی قانون کی حکمرانی کی اصلی رکاوٹیں ہیں اور شہریوں کے خلاف ایسے غیرقانونی اقدامات معاشی دہشتگردی کا باعث بنیں گے۔
274*9393**
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
7 + 1 =