امریکہ میں نامور ایرانی ریسرچر کی گرفتاری، ایرانی بایو ٹکنالوجسٹس کا اظہار تشویش

تہران، ارنا - ایران میں بایو ٹکنالوجسٹس تنظیم نے امریکہ میں نامور ایرانی سائنسی محقق پروفیسر مسعود سلیمانی کی بلاجواز گرفتاری پر گہری تشویش کا اظہار کیا ہے.

اسلامی جمہوریہ ایران کی بائیوٹیکنالوجی سے متعلق 11 ویں قومی کانفرنس کے شرکا نے جاری کردہ ایک قرارداد میں کہا کہ امریکہ میں ایرانی محقق ڈاکٹر 'مسعود سلیمانی' کی گرفتاری کے تسلسل جنہوں نے اپنے ہم وطنوں کے دکھ و درد کی کمی کے لیے بھرپور کوششیں کی ہیں ، کو سیاستدانوں کی بے عزتی اور سائسی امور میں سیاسی امور کی مداخلت کے لیے ایک واضح مثال ہے.
اس قرارداد میں آیا ہے کہ شرکت کرنے والوں نے بین الاقوامی برادری اور انسانی حقوق کی تنظیموں خاص طور پر اقوام متحدہ سے اس پروفیسر کی جلد رہائی کا مطالبہ کردیا.
یاد رہے کہ 22اکتوبر 2018 کو مسعود سلیمانی ایک پروفیسر اور سٹیم سیل کے محقق کی حیثیت سے امریکہ روانہ ہوگیا مگر ویزا ملنے کے باوجود شکاگو کے ہوائی اڈے پر نامعلوم وجوہات کی بناء پر گرفتار اس کے بعد علاقے جورجیا میں آٹلانٹا "دیتون" جیل میں منتقل کردیا گیا.
9410٭274٭٭
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
8 + 7 =