وعدوں کی پاسداری کو دیکھ کر وعدہ نبھائیں گے: ایران کا اعلان

تہران، ارنا - اسلامی جمہوریہ ایران میں حکومتی ترجمان نے یہ بات واضح کردی ہے کہ جوہری معاہدے سے متعلق یورپی فریقین کی جانب سے وعدوں پر عمل درآمد کی نوعیت کو دیکھ کر ہم اپنے وعدے نبھائیں گے.

یہ بات "علی ربیعی" نے پیر کے روز اپنی ہفتہ وار پریس بریفینگ میں صحافیوں کے ساتھ گفتگو کرتے ہوئے کہی.
اس موقع پر انہوں نے کہا کہ گزشتہ ہفتے کے دوران ملک کی نازک صورتحال میں دوروں، ٹیلی فونک رابطے اور مختلف ملاقاتیں اہم مسائل تھے.
ربیعی نے کہا کہ خارجہ پالیسی کے اہم مسائل میں سے ایک جوہری معاہدے کے نفاذ کے لئے فرانسیسی صدر ایمانوئل میکرون اور یورپی یونین کے ساتھ مذاکرات کرنا تھا.
انہوں نے مزید کہا کہ گزشتہ ہفتوں کے دوران ایرانی اور فرانسیسی صدور کے درمیان سنجیدہ مذاکرات کئے گئے اور ظریف نے بھی یورپی فریقین کے جوہری وعدوں کے نفاذ کے طریقے پر مذاکرات کیا اور خوش قسمتی سے بہت سے معاملات میں نظریہ ایک دوسرے کے قریب ہیں۔
انہوں نے کہا کہ یورپی فریقین کے جوہری وعدوں کا نفاذ تکنیکی لحاظ سے جائزہ لیا جا رہا ہے، نائب ایرانی وزیر خارجہ برائے سیاسی امور سید عباس عراقچی، وزارت تیل اور مرکزی بینک کے نمائندوں کے دورے پیرس کا مقصد یورپی فریقین کی جانب سے جوہری وعدوں کو پورا کرنا ہے.
ایرانی حکومتی ترجمان نے مزید کہا کہ جیسا کہ پہلے ذکر ہوچکا ایرانی تیل کو خریداری ہوگا اور اس کی رقم کی ادائیگی کی تک رسائی اور ملک کی واپسی ہمارے مذاکرات کا موضوع ہے.
274*9393**
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
2 + 14 =