یورپ کے برعکس ایران کے روس اور چین سے تزویراتی تعلقات ہیں: ظریف

تہران، ارنا-  اسلامی جمہوریہ ایران کے وزیر خارجہ نے کہا ہے کہ ایران کے روس اور چین کیساتھ جامع اور اسٹریٹجک تعلقات ہیں کیونکہ ان دونوں ممالک نے یورپی ممالک کے برعکس ایران سے تعلقات کا سلسلہ جاری رکھا ہے۔

ان خیالات کا اظہار "محمد جواد ظریف" نے اتوار کے روز ایرانی پارلیمنٹ کی قومی سلامتی اور خارجہ پالیسی کمیٹی کے اجلاس میں گفتگو کرتے ہوئے کیا۔

انہوں نے مزید کہا کہ اگر یورپی ممالک جوہری معاہدے سے متعلق اپنے وعدوں پر عمل نہ کریں تو ایران کیجانب سے جوہری وعدوں پر عمل درآمد کی معطلی کا تیسرا فیصلہ اٹھائے گا۔

ظریف نے مزید کہا کہ ہم جوہری معاہدے کے تمام فریقین کو ایک ہی نظر سے نہیں دیکھتے ہیں بلکہ روس اور چین کو دوسرے ممالک سے الگ سمجھتے ہیں۔

ایرانی وزیر خارجہ نے مزید کہا کہ ایران کے روس اور چین کیساتھ جامع اور اسٹریٹجک تعلقات ہیں کیونکہ ان دونوں ممالک نے یورپی ممالک کے برعکس ایران سے تعلقات کا سلسلہ جاری رکھا ہے۔

ایرانی وزیر خارجہ نے کہا کہ گروپ 4+1 سے متعلق وعدوں پر عمل کرنے کے حوالے سے جو کچھ کہا جارہا ہے اس کی توجہ بنیادی طور پر تین یورپی ممالک اور یورپی یونین پر مرکوز ہے جو اب تک مناسب اقدام نہیں اٹھائے ہیں۔

ظریف نے مزید کہا کہ اگر وہ باقی وقت میں اپنے وعدوں پرعمل کریں تو ایران بھی جوہری وعدوں کے عمل درآمد رکنے کے تیسرے مرحلے سے متعلق نظر ثانی کرے گا۔
*274**9467
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
3 + 2 =