1 ستمبر، 2019 11:02 AM
Journalist ID: 2393
News Code: 83460282
0 Persons
ایران کا نقطہ نظر جوہری معاہدے کو بچانا ہے: ایرانی صدر

تہران، ارنا – ایرانی صدر مملکت 'حسن روحانی' نے کہا ہے کہ ایران کا اہم نقطہ نظر اس ناقابل تبدیل جوہری معاہدے کے احکامات کو بچانا ہے.

یہ بات ڈاکٹر حسن روحانی نے گزشتہ رات فرانسیسی صدر 'ایمانوئیل میکرون' کے ساتھ ایک ٹیلی فونک رابطے کے دوران گفتگو کرتے ہوئے کہی.

اس موقع پر دونوں ممالک کے صدور نے تہران اور پیرس کے درمیان دوطرفہ،علاقائی اور بین الاقوامی مسائل پر تبادلہ خیال کے فروغ کی ضرورت پر زور دیا.

روحانی نے جوہری معاہدے کے بچانے کے لیے فرانس کی بھرپور کوششوں کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ ایرانی وزیر خارجہ کا حالیہ دورہ فرانس خطے اور دنیا کی عوامی و سیاسی رائے کے لئے بہت اہم تھا.

صدر روحانی نے کہا کہ فریقین کی ذمہ داریوں کو مکمل پورا کرنا اور خلیج فارس اور آبنائے ہرمز سمیت تمام آبی گزرگاہوں پر مفت جہاز رانی کی سلامتی کا قیام موجودہ مذاکرات میں ایران کے دو اہم مقاصد میں ہیں.

روحانی نے مزید بتایا کہ بدقسمتی سے جوہرے معاہدے سے امریکہ کی یکطرفہ علیحدگی کے بعد یورپی ممالک نے بھی اپنے وعدوں کو پوراکرنے کے لیے کوئی عملی اقدام نہیں اٹھایا ہے.

ایرانی صدر نے کہا کہ جوہری معاہدے کے احکامات ناقابل تبدیل ہیں اور تمام فریقین کو ان کے تمام احکامات کا پابند ہونا چاہیے.

روحانی نے کہا کہ ایران کےخلاف تمام امریکی پابندیوں کو مکمل اٹھانے کی صورت میں ہم اگلے مذاکرات پر آمادہ ہوں گے.

انہوں نے مزید بتایا کہ اگر یورپی ممالک اپنے وعدوں پر عمل نہ کریں ایران جوہری وعدوں کی کمی کے تیسرے مرحلہ کا آغاز کرے گا.

انہوں نے کہا کہ خطے میں موجودہ کشیدگی کوئی ملک کے مفاد میں نہیں ہے آج صیہونی ریاست کے حکام، ایران، عراق، لبنان اور شام سمیت دوسرے ممالک کے سامنے کمپیوٹیشنل غلطیوں کا شکار ہیں اور وہ معافی مانگنے کے بجائے فخر سے اپنے جارحانہ اقدامات کا اعلان کرتے ہیں.

روحانی نے مزید کہا کہ توقع کی جا رہی ہے کہ فرانس اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کے کلیدی رکن کی حیثیت سے سلامتی کونسل کی قراردادوں پر عمل درآمد کر کے اقوام متحدہ کے منشور سے حمایت کے لیے بھرپور کوشش کرے.

اس موقع پر فرانسیسی صدر نے محمد جواد ظریف کے حالیہ دورہ فرانس کو مثبت قرار دیتے ہوئے کہا کہ اس دورے سے ایرانی مفادات کی فراہمی کے لیے ایران کا پختہ عزم ثابت ہوا.

انہوں نے کہا کہ روان ہفتے کو ایران اور فرانس کے اقتصادی ماہرین کے درمیان ایک نشست منعقد ہو گی اور یقینی طور پر بات چیت کے تسلسل اور مذاکرات کے ذریعے مسائل کو حل کرنا ایک صحیح فیصلہ ہے۔

میکرون نے مزید کہا کہ فرانس، ایران کے ساتھ سیاسی اور اقتصادی تعلقات کے راستے میں حائل رکاوٹوں کو دور کرنے اور علاقائی تناؤ کو حل کرنے کےلیے کوشاں ہے.

اس نے ایران کے ساتھ اپنے معاملات میں سیاسی اور معاشی مسائل کو حل کرنے اور علاقائی تناؤ کو حل کرنے کی کوشش کی ہے۔

انہوں نے مزید بتایا کہ فرانس مختلف چیلنجوں خاص طور پر یمن کے بحران کے حل کے لیے ایران اور فرانس کے درمیان باہمی تعاون کو فروغ دینے کا خواہاں ہے.

9410٭274٭٭

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
6 + 0 =