ایران کو جوہری معاہدے پر عمل کرنے کا صلہ دینا ہوگا: چینی وزیر خارجہ

بیجنگ، ارنا - چین کے وزیر خارجہ نے کہا ہے کہ اسلامی جمہوریہ ایران کو جوہری معاہدے پر من و عن عمل کرنے کا صلہ دینا ہوگا اور اس حوالے سے چین اپنی حمایت جاری رکھے گا.

چینی محکمہ خارجہ کی ویب سائٹ کے مطابق چین کے وزیر خارجہ وانگ ژی نے گزشتہ روز بیجنگ میں اپنے ایرانی ہم منصب کیساتھ ایک ملاقات میں کہا کہ چین ایران کے جوہری پروگرام کیلیے بین الاقوامی کوششوں کی مکمل حمایت کرے گا۔
انہوں نے بتایا کہ چین ایک ذمہ دار ملک کی حیثیت سے ایران جوہری معاہدے کے بچانے اور اپنی بین الاقوامی ذمہ داریوں کو پورا کرنے کے ساتھ ساتھ خطی کشیدگی کے خاتمے کے لئے اپنا موثر کردار ادا کر سکتا ہے.
انہوں نے دنیا میں بدامنی، انفرادیت اور سیاسی غنڈہ گردی کے فروغ کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ چین اور ایران کو دو اسٹریٹجک شراکت دار کی حیثیت سے اسٹریٹجک مشاورت کو مستحکم کرنے کی ضرورت ہے۔
انہوں نے مزید کہا کہ چین، دوسرے ممالک کے ساتھ مل کر اجتماعیت کا دفاع کر کے بین الاقوامی تعلقات کے بنیادی اصولوں کی پاسداری کے ساتھ ساتھ تمام ممالک کے جائز حقوق اور مفادات کے تحفظ کے لئے پرعزم ہے۔
اس موقع میں ایرانی وزیر خارجہ 'محمد جواد ظریف' نے کہا کہ موجودہ صورتحال میں بین الاقوامی قانون کو نظرانداز کرنے کا رجحان عالمی سلامتی اور امن کے لیے خطرہ ہے اور ایران سنجیدہ طور پر دوسرے ممالک کے اندرونی معاملات میں کسی بھی مداخلت کی سخت مخالفت کرتا ہے۔
ایرانی وزیر نے کہا کہ ایران چین کے ساتھ بیلٹ اینڈ روڈ کے منصوبے کے فروغ، سیاسی، اقتصادی، سائنسی، ٹیکنالوجی، ث‍قافتی شعبوں میں باہمی تعلقات بڑھانے کا خواہاں ہے.
تفصیلات کے مطابق، ظریف گزشتہ روز ایک اعلی وفد کی قیادت میں بیجنگ پہنچ گئے جہاں چینی حکام نے ان کا استقبال کیا.
ظریف بیجنگ میں دو روز قیام کے بعد جاپان روانہ ہوں گے.
9410٭274٭٭
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
7 + 2 =