فرانس کے دوبارہ دورے کا مقصد گزشتہ معاملات کا مزید جائزہ لینا تھا: ظریف

بیجنگ، ارنا - ایرانی وزیر خارجہ نے کہا ہے کہ ان کے فرانس کے دوبارہ دورے کا مقصد پہلے سے طے شدہ معاملات کا مزید جائزہ لینا تھا.

یہ بات «محمد جواد ظریف» نے پیر کے روز دورہ چین کے موقع پر بیجنگ کے ہوائی اڈے پر صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہی.

ظریف نے کہا کہ انہوں نے اپنے فرانسیسی ہم منصب کی دعوت پر وہاں کا دوبارہ دورہ کیا.
انہوں نے کہا کہ فرانس کے حالیہ دورے پر دونوں سربراہان مملکت کے درمیان طے پانے والے مذاکرات کا سلسلہ جاری رکھنے کے علاوہ بینکاری اور تیل کے مسائل پر بھی تبادلہ خیال کیا گیا.
انہوں نے دورہ چین سے متعلق کہا کہ اس موقع پر ایران جوہری معاہدہ اور تازہ ترین علاقائی صورتحال بالخصوص دونوں ممالک کے درمیان تزویراتی منصوبوں پر مذاکرات ہوں گے..
ایرانی وزیر خارجہ نے کہا کہ انہوں نے فرانسیسی وزرائے خارجہ اور خزانہ کے ساتھ چار گھنٹے طویل مذاکرات کئے اور فرانسیسی صدر "امانوئل میکرون" کے ساتھ بھی ملاقات کی.
ایرانی وزیر خارجہ نے کہا کہ برطانوی وزیر اعظم اور جرمن چانسلر کے مشیروں کے ساتھ بھی جوہری معاہدے اور نئی تبدیلیوں سے متعلق بات چیت ہوئی.
انہوں نے کہا کہ ہمیں امید ہے کہ ایسے مذاکرات یورپ کی جانب سے جوہری وعدوں پر عملدرآمد کرنے کے لئے موثر ہوں گے.
محمد جواد ظریف اپنے وفد کے ساتھ پیر کے روز چینی دارالحکومت بیجنگ پہنچ گئے، وہ چین کے بعد جاپان اور ملائیشیا کا دورہ کریں گے.
274*9393**
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
2 + 1 =