23 اگست، 2019 9:04 PM
Journalist ID: 1917
News Code: 83447843
0 Persons
صدر میکرون کی تجاویز صحیح سمت میں جار رہی ہیں: ظریف

تہران، ارنا- اسلامی جمہوریہ ایران کے وزیر خارجہ نے کہا ہے کہ فرانسیسی صدر کی تجاویز صحیح سمت میں جار رہی ہیں لیکن اس سلسلے میں مزید اقدامات اٹھانے کی ضرورت ہے۔

ان خیالات کا اظہار "محمد جواد ظریف" نے فرانس کی سرکاری نیوز ایجنسی کیساتھ انٹرویو دیتے ہوئے کیا۔

انہوں نے مزید کہا کہ فرانس کے صدر "ایمانوئیل میکروں" نے گزشتہ ہفتے کے دوران ایرانی صدر مملکت ڈاکٹر "حسن روحانی" کو اچھی تجاویز پیش کی ہیں اور یہ تجاویز صحیح سمت میں جار رہی ہیں۔

ایرانی وزیر خارجہ نے فرانسیسی صدر کیساتھ اپنی حالیہ ملاقات کو تعمیری قرار دیتے ہوئے کہا کہ ہم نے تمام امکانات کا جائزہ لیا ہے اور صدر میکرون یورپ کے دیگر شراکت داروں کیساتھ اس معاملے کی پیشرفت کیلئے بات چیت کریں گے۔

فرانس نیوز ایجنسی نے کہا ہے کہ اسلامی جمہوریہ ایران ،امریکی مخالف پابندیوں کی وجہ سے ملکی معیشت میں رونما ہونے والے نقصانات کو دور کرنے کا خواہاں ہے اور ایرانی وزیر خارجہ کے مطابق امریکی پابندیاں، ایرانی عوام کا نشانہ بنی ہیں۔

ظریف نے مزید کہا کہ جیسے ہی یورپ، جوہری معاہدے سے متعلق اپنے وعدوں پر بھر پور طریقے سے عمل کرے ویسے ہی اسلامی جمہوریہ ایران پچھلے کی صورتحال پر واپس آئے گا۔

ایران جوہری معاہدے سے امریکی یکطرفہ علیحدگی اور ایران مخالف امریکی دباؤ میں اضافے کی وجہ سے اسلامی جمہوریہ ایران نے جوہری معاہدے کی سالگرہ کے موقع پر اس بین الاقوامی معاہدے سے متعلق اپنے کیے گئے وعدوں کے کچھ حصے سے دستبرداری کا فیصلہ کیا۔

ایرانی وزیر خارجہ نے فرانسیسی صدر کیجانب سے دی جانے والی تجاویز کے حوالے سے مزید تفصیلات نہیں بتایا لیکن انہوں نے یورپ کیجانب سے جوہری معاہدے کے نفاذ کیلئے مزید سہولیات فراہم کرنے پر زور دیا۔

ظریف نے مزید کہا کہ اسلامی جمہوریہ ایران کیلئے یورپ کیساتھ تجارتی تعلقات کا سلسلہ جاری رکھنے کی اہمیت رکھتا ہے۔

ایرانی وزیر خارجہ نے یورپی ممالک کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ ایران جوہری معاہدے سے متعلق مسائل کو بغیر امریکی موجودگی کے بھی حل کیا جا سکتا ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ امریکہ کو اس حوالے سے کلیدی کردار حاصل نہیں ہے لہذا اگر یورپ اور بین الاقوامی برادری چاہئیں تو وہ ایران جوہری معاہدے کے تحفظ کیلئے مناسب اقدامات اٹھا سکتے ہیں۔

 **9467
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@ 

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
3 + 0 =