آئل ٹینکر" آدریان دریا" آج رات جبل الٹر سے ملک روانہ ہوگا: ایرانی سفیر

تہران، ارنا- برطانیہ مین تعینات ایرانی سفیر نے کہا ہے کہ جبرالٹر میں دو ماہر انجینئرنگ ٹیم کی آمد کے ساتھ توقع کی جاتی ہے کہ آئل ٹینکر آدریان دریا آج رات ملک روانہ ہوگا۔

"حمید بعیدی نژاد" نے اپنے ایک ٹوئٹر پیغام میں مزید کہا کہ جمعرات کو برطانیہ میں زیر حراست ایرانی تیل بردار جہاز کی رہائی کا حکم دیا گیا اور جہاز میں عملے کی تعیناتی کیلئے اور دیگر امور سے متعلق دن رات کی کوششیں جاری ہیں۔

انہوں نے کہا کہ ہم آہنگ کرنے والی کمپنی کیساتھ لمحہ بہ لحمہ رابطے میں ہیں اور جبرالٹر میں دو ماہر انجینئرنگ ٹیم کی آمد کے ساتھ توقع کی جاتی ہے کہ آئل ٹینکر آدریان دریا آج رات ملک روانہ ہوگا۔

 ایرانی سفیر کا کہنا ہے کہ جبل الٹر کی سپریم کورٹ نے با ضابطہ طور پر امریکہ کیجانب سے ایرانی تیل بردار جہاز کو حراست لینے کی درخواست کی مخالف کی ہے۔

جبل الٹر سپریم کورٹ کے مطابق ایرانی تیل بردار جہاز کو حراست لینے کی امریکی درخواست، اس کی یکطرفہ پابندیوں کے مطابق ہوئی ہے حالانکہ یورپی یونین کے قوانین کے مطابق اس درخواست کے نفاذ کا امکان نہیں ہے۔

 برطانیہ میں تعینات ایرانی سفیر نے کہا ہے کہ گریس ون تیل بردار جہاز کے نام کو آدریان دریا میں تبدیل کرنے کا مقصد ہرگز پابندیوں کو بائی پاس کرنا نہیں ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ ایرانی تیل بردار جہاز کو کسی بھی پابندی کا سامنا نہیں ہے.

یہ بات قابل ذکر ہے کہ گزشتہ جولائی میں جبرالٹر اور برطانوی سیکورٹی فورسز نے 21 لاکھ ٹن تیل لے جانے والے ایرانی بحری جہاز کو قبضے میں لیا تھا جس سے تہران اور لندن کے درمیان بحران پیدا ہوا.

یورو نیوز ایجنسی کے مطابق، جبرالٹر کی سپریم کورٹ نے برطانیہ کی جانب سے غیرقانونی طور پر حراست میں لئے جانے والے ایرانی تیل بردار جہاز کے افسر اور عملوں کی رہائی کا حکم دے دیا ہے.

19 جولائی کو اسلامی جمہوریہ ایران نے بھی بین الاقوامی سمندری قوانین کی خلاف ورزی کرنے پر برطانوی تیل بردار جہاز کو حراست میں لیا.

**9467
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
7 + 3 =