چہلم زائرین کی سفری سہولیات میں اضافہ کیا جائے گا: ایران

تہران، ارنا- ایرانی وزیر داخلہ نے کہا ہے کہ چہلم حضرت امام حسین علیہ السلام کے سالانہ پیدل مارچ میں شریک ہونے والے لاکھوں زائرین کی سفری سہولیات میں مزید اضافہ کیا جائے گا.

 ان خیالات کا اظہار "عبدالرضا رحمانی فضلی" نے ہفتہ کے روز ایران کے دورے پر آئے ہوئے اپنے عراقی ہم منصب کیساتھ ایک ملاقات میں گفتگو کرتے ہوئے کیا۔

انہوں نے مزید کہا کہ ایران اور عراق کے درمیان مشترکہ سرحدوں کی سلامتی اور اربعین کے زائرین کے امور سے متعلق باہمی تعاون میں اضافہ ہوتا جار رہا ہے۔

رحمانی فضلی نے ایرانی صدر کے حالیہ دورہ عراق کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ اس دورے کیساتھ دونوں ممالک کے درمیان مختلف شعبوں بشمول اربعین کے زائرین کے حوالے سے باہمی تعلقات کے فروغ کو بڑی سنجیدگی سے تعاقب کیا گیا۔

ایرانی وزیر داخلہ نے مزید کہا کہ عراقی حکومت کیساتھ تعاون سے "خسروی" سرحد کو کھولنے سمیت، ایرانی اور عراقی زائرین کیلئے ویزہ فری سفری سہولیات اور اربعین کے زائرن کیلئے خدمات کی فراہمی میں اضافہ کریں گے۔

انہوں نے کہا کہ ہونے والے ملاقات میں ایران اور عراق کے درمیان باہمی تعاون کے ایک معاہدے پر دستخط کیا گیا جس میں مختلف معاملات بشمول دونوں ملکوں کے سیکورٹی اہلکاروں کے درمیان تعاون سمیت اربعین کے زائرین اور سرحدی تعلقات کی توسیع کا ذکر کیا گیا ہے۔

رحمانی فضلی نے اس امید کا اظہار کردیا کہ دونوں ملکوں کے سرحدی صوبوں کے درمیان تعمیری تعاون سے ایران اور عراق کے درمیان تعلقات میں مزید اضافہ ہوجائے گا۔

 اس موقع پر عراق کی وزیر داخلہ نے دونوں ملکوں کے درمیان طے پانے والے تعاون کے معاہدے سے اربعین کے زائرین کیلئے مزید سفری سہولیات فراہم ہوجائیں گے۔

انہوں نے اپنے اس دورے ایران کے مقصد کو دونوں ملکوں کے درمیان سرحدی اور سیکورٹی تعاون کا فروغ قرار دے دیا۔

 الیاسری نے مزید کہا کہ عراقی حکومت نے ایرانی زائرین کی آمد و رفت کو پُر امن بنانے کیلئے تمام صلاحیتوں کو بروئے کار لانے کا یقین دلایا ہے

انہوں نے کہا کہ عراقی وزیر اعظم عادل المہدی نے بھی اربعین کے زائرین کیلئے تمام سہولیات کو فراہم کرنے کی ہدایت دی ہے۔

**9467
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
1 + 15 =