امریکی اتحاد خطے میں عدم تحفظ کا باعث بنے گا: ایرانی وزیر دفاع

تہران، ارنا - ایران کے وزیر دفاع اور لاجسٹک نے کہا ہے کہ سمندری سلامتی کی فراہمی کے بہانے سے امریکی قیادت میں فوجی اتحاد کا قیام خطے میں بدامنی کا باعث بنے گا.

یہ بات بریگیڈیئر جنرل "امیر حاتمی" نے منگل کے روز اپنے کویتی، قطری اور عمانی ہم منصبوں کے ساتھ الگ الگ ٹیلی فونک رابطے میں گفتگو کرتے ہوئے کہی۔
اس موقع پر انہوں نے اس بات پر زور دیا کہ خطی سلامتی صرف اسی علاقے کے ممالک فراہم کرسکتے جبکہ غیرملکی فورسز کی موجودگی بدامنی اور عدم استحکام کے سوا کچھ نہیں.
بریگیڈیئر جنرل حاتمی نے کہا کہ اسلامی جمہوریہ ایران علاقائی بالخصوص خلیج فارس کی سلامتی کی فراہمی کا ذمہ دار ہے اور ہم خلیج فارس، آبنائے ہرمز اور بحیرہ عمان کی سلامتی کے لئے کسی بھی کوششوں سے دریغ نہیں کریں گے.
انہوں نے کہا کہ علاقائی سلامتی ایران اور دیگر ہمسایوں کے درمیان باہمی تعاون کا نتیجہ ہے لہذا خلیج فارس کی سلامتی انہی ممالک کے ذریعہ فراہم ہوگی.
انہوں نے کہا کہ پڑوسیوں کے ساتھ کثیرالجہتی تعلقات کا فروغ اسلامی جمہوریہ ایران کی خارجہ پالیسی کا اہم جز ہے اسی لئے ہم دوست ممالک کے ساتھ باہمی تعاون بڑھانے کا خیرمقدم کرتے ہیں.
انہوں نے مزید کہا کہ امریکہ علاقے میں بدامنی کی اصلی وجہ ہے اور اس کے علاوہ غیرملکی فوجیوں کی موجودگی ناقابل قبول ہے.
ایرانی وزیر دفاع نے کہا کہ نام نہاد امریکی فوجی اتحاد میں ناجائز صہیونی ریاست کی شمولیت سے علاقے پر تباہ کن اثرات مرتب ہوں گے.

9393**

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
6 + 3 =