مشکوک نشستوں سے علاقائی سلامتی پر منفی اثرات مرتب ہوں گے: ایران

تہران، ارنا - اسلامی جمہوریہ ایران نے بحرین میں سمندری سلامتی پر نام نہاد اجلاس کے دوران ایران مخالف اقدامات کی مذمت کرتے ہوئے ایسی مشکوک نشستوں کو علاقائی سلامتی کے لئے خطرناک قرار دیا ہے.

یہ بات ترجمان دفترخارجہ "سید عباس موسوی" نے جمعرات کے روز اکتوبر مہینے میں منامہ کی میزبانی میں سمندری سلامتی سے متعلق بحرینی حکومت کی ایران مخالف نشستوں پر اپنے ردعمل کا اظہار کرتے ہوئے کہی۔
ترجمان دفترخارجہ نے مزید کہا ہے کہ ایسی مشکوک نشستوں سے علاقائی سلامتی پر منفی اثرات مرتب ہوں گے.
اس موقع پر انہوں نے بحرینی وزارت خارجہ کی ایران مخالف حالیہ بیانات کی مذمت کرتے ہوئے کہا کہ ایسی نشستیں علاقائی سیکورٹی کو درہم برہم کررہی ہے اور خلیج فارس کے علاقے میں غیرعلاقائی بالخصوص صہیونی فوجیوں کی موجودگی کا باعث بنے گی۔
موسوی نے کہا کہ بحرینی حکام کو اس نشستوں کی میزبانی اور بے وقوفانہ اقدامات کو روکنا چاہیئے۔
انہوں نے اس بات پر زور دیا کہ علاقائی ممالک کی سلامتی ناقابل تقسیم ہے اور ان ممالک سنجیدہ اقدامات کے ساتھ اجنبیوں کی مداخلتوں کو روک کریں۔
تفصیلات کے مطابق، امریکی وزارت خارجہ نے اعلان کردیا کہ 21 اور 22 اکتوبر بحرینی دارالحکومت منامہ میں ایوی ایشن اور میری ٹائم کی نشست منعقد کی جائے گی۔
274*9393**
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
9 + 0 =