ظریف پر پابندیاں احمقانہ فیصلہ ہے: سابق لبنانی وزیر خارجہ

بیروت، ارنا - لبنان کے سابق وزیر خارجہ نے ظریف کے خلاف حالیہ امریکی پابندیوں کو احمقانہ قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ ایسے اقدامات سے ایران کی سفارتی سرگرمیوں کو محدود نہیں کیا جاسکتا.

یہ بات "عدنان منصور" نے ہفتہ کے روز ارنا نیوز ایجنسی کے ساتھ گفتگو کرتے ہوئے کہی.
اس موقع پر انہوں نے کہا کہ محمدجواد ظریف ایرانی سفارتکاری کے سربراہ اور دنیا کے دوسرے ممالک کے ساتھ مذاکرات کرنے کی ذمہ دار ہیں۔ اب وہ پابندیوں کی فہرست میں کیسا شامل ہوسکتا ہے جبکہ امریکہ ایران کے ساتھ مذاکرات کا مطالبہ کر رہا ہے تو وہ کس سے بات کرے گا؟
منصور نے دوسرے ممالک سمیت یورپی یونین کی امریکی فیصلے کی مخالفت پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ امریکہ کے اس اقدام دنیا کے دوسرے ممالک پر اثر نہیں پڑے گا کیونکہ اسلامی جمہوریہ ایران تقریبا تمام ممالک کے ساتھ سفارتی تعلقات قائم رکھتا ہے.
انہوں نے ایران پر عرب ممالک کے موقف کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ بالاخرہ عرب ممالک سمجھیں گے کہ اسلامی جمہوریہ ایران ان کے دشمن نہیں بلکہ ایک پڑوسی اور دوست ملک ہے اور علاقائی ممالک کو اس کے ساتھ اچھے تعلقات قائم رکھنا چائیے کیونکہ ایسے تعلقات نہ صرف ایران بلکہ ان ممالک کے مفاد میں ہیں.
9393**
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
2 + 0 =