ایران، جوہری معاہدے پر عملدرآمد روکنے کا تیسرا فیصلہ باقاعدگی سے اٹھائے گا: ظریف

تہران، ارنا - ایرانی وزیرخارجہ نے کہا ہے کہ موجودہ صورتحال کو دیکھتے ہوئے ہم جوہری معاہدے کی بعض شقوں پر عمل درآمد روکنے سے متعلق تیسرا فیصلہ اٹھائیں گے.

محمد جواد ظریف نے اپنی ایک گفتگو میں مزید کہا کہ ایران کے پاس یہ حق محفوظ ہے کہ وہ اپنے وعدوں پر عمل کرے یا نہ کرے.

انہوں نے مزید کہا کہ جوہری معاہدے کے کمیشن کے رکن ممالک نے اس بات پر اتفاق کیا کہ امریکہ تمام چیلنجز کی جڑ ہے، ایران کا مطالبات واضح ہے اور اس سے آگے کی توقع نہیں کی جاتی تھی۔
ظریف نے کہا کہ ہمارے تمام اقدامات جوہری معاہدے کے فریم ورک کے تحت ہے، ہم نے کہا تھا کہ اگر دوسرے فریقین اپنے وعدوں پر مکمل عمل نہ کریں تو ایران اپنے جوہری وعدوں میں کمی لائے گا.
انہوں نے اس بات پر زور دیا کہ موجودہ صورتحال کو دیکھتے ہوئے ہم جوہری معاہدے کی بعض شقوں پر عمل درآمد روکنے سے متعلق تیسرا فیصلہ اٹھائیں گے اور ایران کے پاس یہ حق محفوظ ہے کہ وہ اپنے وعدوں پر عمل کرے یا نہ کرے.
ایرانی وزیر خارجہ نے دوسرے رکن ممالک کی ایران کے جوہری وعدوں کی کمی کے تیسرے مرحلے کی معطلی کی درخواست کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ صرف اسلامی جمہوریہ ایران اس موضوع پر فیصلہ کرے گا، یقینا اگر دوسرے فریقین اپنے وعدوں پر مکمل عملدرآمد نہ کریں تیسرے مرحلے کا نفاذ کیا جائے گا.
274*9393**
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
1 + 8 =