ظریف کیخلاف پابندیوں سے مذاکرات کیلئے امریکی دعوی جھوٹا نکلا: ایران

تہران، ارنا - سنیئر نائب ایرانی صدر نے کہا ہے کہ وزیر خارجہ محمد جواد ظریف پر امریکہ کی غیرقانونی پابندیوں نے ایران سے مذاکرات کیلئے ٹرمپ انتظامیہ کے جھوٹے دعوے کو بے نقاب کردیا.

انہوں نے مزید کہا کہ حتی کہ ایرانی وزیر خارجہ کے سمجھدار دشمن بھی ظریف کے خردمندی اور جنگوں و تناؤ سے دور رہنے کیلئے مناسب مواقع فراہم کرنے پر ان کے خرد سے واقف ہیں۔

"اسحاق جہانگیری" نے اپنے ایک ٹوئٹر پیغام میں کہا کہ ایرانی وزیر خارجہ کیخلاف پابندیاں لگانے کے امریکی اقدام، اس کی دھوکہ بازی اور مذاکرات کیلئے اس کے جھوٹے وعدوں کا ثبوت ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ ظریف پر پابندیاں لگانا، سامراجی طاقتوں کی بے بسی، سمیت ان کے بغیر سوچ سمجھ اور مہم جویانہ اقدامات کی ایک اور نئی علامت ہے۔

 اس کے علاوہ ایرانی دفترخارجہ کے ترجمان نے بھی  وزیرخارجہ محمد جواد ظریف پر حالیہ امریکی پابندی سے متعلق اپنے ردعمل میں کہا ہے کہ امریکہ، ظریف کی سوچ سے خوفزدہ ہے.

"سید عباس موسوی" نے جمعرات کو اپنے ایک ٹوئٹر پیغام میں مزید کہا کہ امریکی حکام کی بیوقوفی اور ان کے اقدامات میں تضادات کی حد اسی وقت سامنے آئی جب انہوں نے ایرانی وزیر خارجہ کو بارہا ملک کی سیاست سے لاتعلق قرار دینے کے باوجود بغیر سوچ سمجھ کے ان کیخلاف پابندیاں عائد کی ہیں

"محمد جواد ظریف" نے بھی امریکہ کیجانب سے ان کیخلاف پابندیوں لگانے کے رد عمل میں کہا ہے کہ امریکی حکام کو مجھے اپنی منصوبہ بندیوں اور مقاصد تک پہنچنے کیخلاف بڑا  خطرہ سمجھنے کیلئے شکریہ۔

یہ بات قابل ذکر ہے کہ امریکی وزارت خزانہ نے ایران کیخلاف اپنی دشمن پالیسیوں کے تسلسل میں جمعرات کی رات کو ایرانی وزیر خارجہ کے نام کو اپنی پابندیوں کی فہرست میں قرار دے دیا۔
**9467
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
3 + 1 =