امریکہ، مذاکرات کی میز پر واپسی کا راستہ اچھی طرح جانتا ہے: ظریف

نیویارک، ارنا- اسلامی جمہوریہ ایران کے وزیر خارجہ نے کہا ہے کہ ایران نے نہیں بلکہ امریکہ نے مذاکرات کو چھوڑا ہے اور وہ، مذاکرات کی میز پر واپسی کا راستہ اچھی طرح جانتا ہے۔

یہ بات "محمد جواد ظریف" جو اقوام متحدہ کی سماجی اور معاشی کونسل کی سالانہ نشست میں شرکت کرنے کیلئے نیوریاک کے دورے پر ہیں، نے بدھ کے روز بلوم برگ نیوز چینل کیساتھ انٹرویو دیتے ہوئے کہی۔

انہوں نے اس سے پہلے صحافیوں کیساتھ گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ امریکی معاشی جنگ نے ایرانی عوام کو نشانہ بنایا ہے جسے جلد از جلد رکنے کی ضروت ہے۔

ایرانی وزیر خارجہ نے بلوم برگ نیوز چینل کیساتھ اپنی انٹرویو میں ایران کیجانب سے جوہری بم تیار کرنے کے امریکی دعوی کے حوالے سے کہا ہے کہ اگر ایران جوہری بم تیار کرنے کے درپے تھا اس کو اسی وقت تیار کیا جاتا جب اس کیلئے خرچےکیا تھا لیکن ہم نہ اسی وقت اور نہ ہی ابھی جوہری بم تیار کرنے کے درپے نہیں ہیں کیونکہ اسلامی جمہوریہ ایران کے سپریم لیڈر نے ایک فتوی میں اس کو منع کیا ہے اور ویسے ہمارا خیال میں جوہری بم کی تیاری قیام امن میں مددگار ثابت نہیں ہوگی۔

ظریف نے جبر الٹر میں ایرانی آئل ٹینکر کو تحویل میں لینے کے حوالے سے کہا کہ برطانیہ کو ایرانی آئل ٹینکر کو قبضے میں لینے کا کوئی حق نہیں ہے اور اس کا یہ اقدام، بے شک بحری قزاقی ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ قانون کا اصول یہ ہے کہ جب کوئی اس کی خلاف وزی کرتا ہے تو اس کو کوئی فائدہ حاصل نہیں ہوگا۔ اسلامی جمہوریہ ایران کا مقصد امن اور عزت سے زندگی گزارنا ہے۔

*274**9467
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
captcha