برطانوی وزیر اعظم، ایران جوہری معاہدے کے تحفظ کی خواہاں

لندن، ارنا- برطانوی وزیر اعظم نے ایران جوہری معاہدے کو انتہائی اہم قرار دیتے ہوئے اس کے تحفظ پر زور دیا۔

"تھرسا مے" نے چتم ہاوس تھنک ٹیک میں خطاب کرتے ہوئے کہا کہ جوہری معاہدے کے درپیش چلینجز کے باجود اس کا تحفظ لازمی ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ ایران جوہری معاہدے کے تحفظ کیلئے عملی اقدامات اٹھانے کی ضرورت ہے۔

برطانوی وزیر اعظم نے سیاست کے میدان میں باہمی مفاہمت پر زور دیتے ہوئے کہا ہے کہ ہم چاہیئں یا نہ چاہئیں ایران جوہری معاہدہ، ہمارے مطالبات کے وصول کا سب سے اچھا آپشن ہے۔

واضح رہے کہ ایران جوہری معاہدے کے تین یورپی رکن ممالک بشمول جرمنی، فرانس اور برطانیہ نے اتوار کے روز ایک بیان میں ایران جوہری معاہدے کے تحفظ سمیت خلیج فارس میں حالیہ کشیدگی کو ختم کرنے پر زور دیا۔

 دریان اثنا "سید عباس موسوی" نے بھی جوہری معاہدے سے متعلق تین یورپی ممالک کے بیان کے رد عمل میں کہا کہ اسلامی جمہوریہ ایران، جوہری معاہدے سے متعلق یورپی اراکین کے سارے بیانات اور مواقف کو سنجیدگی سے جائزہ لیتا ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ ایران کیجانب سے جوہری معاہدے سے متعلق اپنے کیے گئے وعدوں پر عمل کرنا اور اس حوالے سے حسن سلوک پر مبنی برتاؤ کرنا، اسی وقت ممکن ہے جب اس معاہدے کے دیگر اراکین بھی اپنے وعدوں پر پوری طرح عمل کریں۔

ترجمان موسوی نے کہا کہ اسلامی جمہوریہ ایران کی توقع ہے کہ جوہری معاہدے کے یورپی اراکین اس معاہدے کے نفاذ کے حوالے سے عملی اور ذمہ دارانہ اقدامات اٹھائیں۔

انہوں نے کہا کہ اسلامی جمہوریہ ایران 8 مئی سے قبل کی صورتحال پر جب پلٹ جائے گا تب اسےعملی طور پر جوہری معاہدے کے ثمرات سے مستقید ہوجائے گا ورنہ دوسرے اراکین کیجانب سے اسی حوالے سے ایران سے کسی بھی طرح توقع رکھنا بالکل ناقابل قبول ہے۔

*274**9467
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
3 + 8 =