برطانیہ قبضے میں لئے جانے والے ایرانی جہاز پر جبرالٹر حکام سے بات کرے گا

برطانوی وزیر اعظم "تھریسا مے" نے کہا ہے کہ وہ قبضے میں لئے جانے والے ایرانی تیل بردار جہاز کو چھڑوانے کے لئے جبرالٹر حکومت سے بات کریں گی.

واضح رہے کہ برطانیہ نے اس سے پہلے ایرانی تیل بردار ٹینکر چھوڑنے پر مشروط آمادگی ظاہر کر دی، دونوں ممالک کے وزرائے خارجہ کے درمیان ٹیلی فونک مذاکرات ہوئے۔

برطانیہ کے وزیر خارجہ جیریمی ہنٹ نے کہا ہے ایرانی تیل بردار بحری جہاز کو اس شرط پر چھوڑا جا سکتا ہے اگر ضمانت دی جائے کہ خام تیل شام نہیں لے جایا جا رہا، انہوں نے ایران سے بات چیت کو تعمیری قرار دیا۔

ایرانی وزیرخارجہ جواد ظریف نے کہا ہے کہ ہرصورت تیل کی ایکسپورٹ جاری رکھیں گے، برطانیہ آئل ٹینکر کو جلد چھوڑے۔

اسلاامی جمہوریہ ایران نے کہا ہے کہ تیل بردار ٹینکر کی منزل شام نہیں تھی۔ برطانیہ نے الزام لگایا تھا کہ ایران کا خام تیل شام لے جانا یورپی یونین کی دمشق پر لگائی گئی پابندیوں کی خلاف ورزی ہے۔

 *274**9467
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
5 + 4 =