ایران اور افغانستان کیساتھ غیرقانونی امیگریشن پر مذاکرات کریں گے: ترکی

تہران، ارنا – ترک وزیر داخلہ نے اسلامی جمہوریہ ایران میں افغان پناہ گزینوں کی صورتحال کا حوالہ دیتے ہوئے کہا ہے کہ ہم تہران اور کابل کے ساتھ غیرقانونی امیگریشن پر مذاکرات کریں گے.

یہ بات "سلیمان سویلو" نے ایک پریس کانفرنس میں خطاب کرتے ہوئے کہی.
انہوں نے کہا کہ افغان مہاجرین کے ایک حصہ حالیہ سالوں میں اپنے ملک کی واپسی اور دوسرا حصہ ترکی کے ذریعہ یورپ میں داخل ہونے کے لئے کوشش کر رہے ہیں.
سویلو نے کہا کہ اسلامی جمہوریہ ایران، ترکی، پاکستان، جمہوریہ آذربائیجان، عراق اور افغانستان کے نائبوں وزرائے خارجہ نے گزشتہ ہفتے ایک مشترکہ نشست میں غیر قانونی امیگریشن، قتل اور منشیات کی اسمگلنگ پر تبادلہ خیال کئے.
انہوں نے کہا کہ آئندہ دنوں کے دوران ان ممالک کے وزرائے خارجہ کے درمیان مشترکہ نشست منعقد کی جائے گی جس میں عملی اقدامات پر مذاکرات کیا جائے گا.
ترک وزیر داخلہ نے اس بات پر زور دیا کہ نہ ایران اور نہ ترکی غیرقانونی امیگریشن کو نظرانداز نہیں کریں گے جس کے حوالے سے دنوں ممالک، افغانستان اور دوسرے ممالک کے درمیان انسان کی اسمگلنگ اور غیر قانونی امیگریشن کے چیلنجز پر مذاکرات جاری رکھیں گے.
9393**
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
captcha