پابندیوں نے عام آدمی کو نشانہ بنایا ہے: صدر آئی پی یو

تہران، ارنا - بین الاقوامی پارلیمانی یونین (IPU) کی خاتون صدر نے ایران مخالف امریکہ کی ظالمانہ پابندیوں پر کڑی تنقید کرتے ہوئے کہا ہے کہ پابندیوں نے عام شہریوں کی زندگی کو نشانہ بنایا ہے.

یہ بات محترمہ خاتون ' گابریلا کوئواس بارون' نے گزشتہ روز ارنا کے نمائندے کے ساتھ گفتگو کرتے ہوئے کہی.

انہوں نے کہا کہ حقیقت میں یہ پابندیاں، سیاسی اور سفارتکاری مذاکرات کے روکنے کے علاوہ امن اور استحکام حاصل کرنے کے لئے موجودہ سہولیات اور صلاحیتوں کے راستے میں رکاوٹ ڈالتی ہیں.

انہوں نے مزید کہا ہم کو اجتماعیت اور پر امن باہمی مذاکرات کو فروغ دینا ہوگا اور اس وقت میں دنیا کو انفرادیت کی بہ نسبت امن اور باہمی مذاکرات کی اشد ضرورت ہے.

'گابریلا کوئواس بارون' نے جوہری معاہدے کے بچانے اور اہمیت کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ ہرچند دنیا کے چند ممالک نے اس ایٹمی معاہدے پر دستخط کیا ہے لیکن ایران جوہری معاہدہ، اجتماعیت کے پیغام کا حامل ہے.

انہوں نے اس عالمی یونین میں ایران کے کردار پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ مختلف پارلیمانیوں کے ساتھ ایران کا باہمی مذاکرات اور پارلیمانی سفارتکاری اور مذاکرات کے سلسلے میں ایران کی رکنیت اور سرگرمیاں ہمارے لیے بہت اہم ہے.

انہوں نے مزید کہا کہ ایک اور اہم بات یہ ہے کہ ایران، عالمی پارلیمانی یونین 'آئی پی یو' کے انسداد دہشتگردی مشاورتی گروپ کا رکن بھی ہے اور یہ ایک گروپ ہے جو مذاکرات کی مضبوطی اور دہشت گردی سے لڑنے کے لئے مواقع فراہم کرتا ہے.

9410٭274٭٭

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
1 + 4 =