28 جون، 2019 10:15 AM
Journalist ID: 1312
News Code: 83373140
0 Persons
جوہری معاہدے پر ایران کا صبر ختم ہوا: عراقچی

تہران، ارنا - نائب ایرانی وزیرخارجہ نے کہا ہے کہ جوہری معاہدے کے نفاذ سے متعلق ہمارا صبر کا پیمانہ لبریز ہوچکا ہے اور اب ایران یکطرفہ طور اس معاہدے پر کوئی عمل درآمد نہیں کرے گا.


«سید عباس عراقچی» نے ایک گفتگو میں مزید کہا کہ جوہری معاہدے کے دوسرے فریق نے وعدوں پر عمل نہیں کیا لہذا ایران بھی اس پر یکطرفہ طور پر عمل کرنے سے تنگ آچکا ہے.
انہوں نے کہا کہ جوہری معاہدے میں شامل مغربی فریق امریکہ کی علیحدگی کے بعد اس کا ازالہ کرنے میں ناکام رہے جبکہ تہران نے گزشتہ ایک سال سے صبر و تحمل کا مظاہرہ کرتا آرہا ہے.
عراقچی کا کہنا تھا کہ ہم نے مغربی فریق کو کافی مہلت دی اور اس کے علاوہ سفارتکاری کا راستہ بھی کھلا رکھا مگر کوئی نتیجہ نہیں نکلا.
انہوں نے مزید کہا کہ ایران، جوہری معاہدے سے امریکی علیحدگی کے خلاف یورپ کے سیاسی مؤقف کا خیرمقدم کرتا ہے تاہم انھیں سیاسی بیانات سے ہٹ کر عملی اقدامات کرنا ہوں گے.
سید عباس عراقچی نے بتایا کہ آج جوہری معاہدے کے مشترکہ کمیشن کا ویانا میں انعقاد کیا جائے گا اور ہمیں امید ہے کہ رکن ممالک اپنی وعدوں کی پاسداری کریں گے دوسری صورت میں ایران اپنے وعدوں پر عمل درآمد روکنے سے متعلق بھرپورانداز میں اگلے فیصلے کا اعلان کرے گا.
یاد رہے کہ ایرانی وزیر خارجہ محمد جواد ظریف نے گزشتہ دنوں کہا تھا کہ ایران کی جانب سے جوہری معاہدے کے بعض حصوں پر عمل در آمد کو روکنے کا پہلا مرحلہ گزشتہ 8 مئی کو شروع ہوا اور اس کا اگلا مرحلہ 7 جولائی سے شروع ہوگا.
انہوں نے کہا کہ ایرانی صدر حس روحانی کی جانب سے جوہری معاہدے میں شامل ممالک کے سربراہوں اور یورپی یونین کی سربراہ کو بھیجے گئے خطوط میں بھی اس بات کا اعلان کیا گیا تھا.

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
2 + 4 =