ٹرمپ، مذاکرات کے ذریعے ایران کی دفاعی قابلیت کو نشانہ بنانا چاہتا ہے: آیت اللہ خامنہ ای

تہران، ارنا - سپریم لیڈر ایران نے فرمایا ہے کہ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی جانب سے مذاکرات کرنے کی پیشکش دھوکے کے سوا کچھ نہیں جس کا اصل مقصد ایرانی قوم کی طاقت اور ملکی دفاعی قابلیت کو نشانہ بنانا ہے.

یہ بات قائد اسلامی انقلاب حضرت آیت اللہ العظمی «سید علی خامنہ ای» نے بدھ کے روز تہران میں عدلیہ کے سربراہ اور سنیئر حکام کے ساتھ ایک ملاقات میں خطاب کرتے ہوئے کہی.
انہوں نے فرمایا کہ ٹرمپ مذاکرات کی پیشکش سے دھوکہ دینا چاہتے ہیں، وہ در اصل ایران کی دفاعی صلاحیت پر حاوی ہونا چاہتے ہیں.
انہوں نے مزید فرمایا کہ ایرانی قوم حالیہ ظالمانہ پابندیوں سے مظلوم بن گئی تاہم قوم کمزور نہیں اور نہ ہی اپنے مؤقف سے پیچھے ہٹے گی.
آیت اللہ خامنہ ای نے فرمایا کہ ایرانی قوم اللہ رب العزت کی مدد سے اور بھرپور طاقت کے ساتھ اپنے مقاصد حاصل کرنے میں کامیابی سے ہمکنار ہوگی.
انہوں نے امریکی صدر کی مذاکراتی پیشکش کو دھوکہ دہی قرار دیتے ہوئے مزید فرمایا کہ جب دشمن دباو ڈالنے میں ناکام رہا تو وہ ہمیں کمزور سمجھ کر مذاکرات کی پیشکش کرتا ہے اور ایران کی ترقی کی بات کرتا ہے، تاہم ایرانی عوام ترقی ضرور کریں گے مگر اس شرط پر کہ امریکہ اس کے قریب نہ ہو.
آیت اللہ خامنہ ای نے مزید فرمایا کہ امریکی حکمران ایرانی عوام سے خوفزدہ ہیں، وہ ایران سے دفاعی صلاحیت اور اسلحہ چھینا چاہتے ہیں اور اس مقصد کے لئے وہ نام نہاد مذاکرات کی پیشکش کررہے ہیں.

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
3 + 13 =