ایران کی علاقائی امن سے متعلق جاپانی وزیر اعظم کی حکمت عملی کی حمایت

بیجنگ، ارنا- جاپان میں تعینات ایرانی سفیر نے کہا ہے کہ تہران، علاقے میں پائیدار قیام امن و سلامتی سے متعلق جاپانی وزیراعظم کی حکمت عملی کی حمایت پر تیار ہے۔

"مرتضی رحمانی موحد" نے پیر کے روز ایک پریس کانفرنس کے دوران صحافیوں کیساتھ گفتگو کرتے ہوئے ایران اور جاپان کے باہمی تعلقات سیمت جاپانی وزیر اعظم کے حالیہ تاریخی دورہ ایران اور علاقے اور دنیا میں ایران اور جوہری معاہدے کے کردار کی اہمیت پر روشنی ڈالی۔

انہوں نے ایران اور چاپان کے درمیان تذویری تعلقات کی 90 ویں سالگرہ کے موقع پر جاپانی وزیراعظم کے دورہ ایران کو انتہائی اہم قرار دیتے ہوئے کہا کہ دونوں ملکوں کے درمیان مختلف شعبوں میں باہمی تعلقات میں اضافہ ہوتا رہتا ہے۔

انہوں نے کہا کہ شنزو ابے کے حالیہ دورہ ایران کا اہم پیغام یہ ہے کہ ایران اور جاپان کے سربراہ، علاقائی اور بین الاقوامی امن کے حصول کی اہمیت سے پوری طرح واقف ہیں۔

ایرانی سفیر نے قریب 41 سال کے بعد کسی جاپانی وزیر اعظم کے دورہ ایران کو دونوں ملکوں کے تعلقات میں ایک اہم موڑ قرار دیتے ہوئے کہا کہ ایران اور جاپان کے درمیان باہمی تعلقات کی توسیع کے حوالے سے اس دورے کا کردار انتہائی اہم ہے۔

رحمانی موحد نے کہا کہ اس دورے کے دوران، دونوں فریقین نے واضح طور پر باہمی تعلقات کے فروغ سمیت ایران جوہری معاہدے کے تحفظ اور خطے میں قیام امن و سلامتی پر زور دیا ہے۔

انہوں نے جاپانی وزیر اعظم اور ایرانی سپریم لیڈر کے درمیان حالیہ ملاقات کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ اس تاریخی اہم ملاقات میں قائد اسلامی انقلاب حضرت آیت اللہ خامنہ ای نے باہمی تعلقات کے فروغ کے حوالے سے جاپان کی تجاویز کا خیر مقدم کرتے ہوئے ایشیا میں بطور ایران کے ہمسایہ اور دوست ملک کے جاپان کے کردار پر زور دیا۔

انہوں مزید فرمایا کہ اگر ٹوکیو کو ایران کیساتھ باہمی تعلقات کی توسیع کا ارادہ ہے تو اسے مضبوط عزم و ارادے کیساتھ اس حوالے سے اقدام کرنا ہے۔

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
6 + 12 =