منشیات کی جنگ میں فرنٹ لائن ایران دنیا کی 76 فیصد افیون پکڑتا ہے

تہران، ارنا - اسلامی جمہوریہ ایران پابندیوں اور وسائل کی کمی کے باوجود منشیات کے خلاف جنگ میں فرنٹ لائن پر کردار ادا کرتے ہوئے اس وقت دنیا کو اسمگلنگ کی جانے والی 76 فیصد افیون کو پکڑتا ہے.

یہ بات ایران کے ادارہ انسداد منشیات کے سیکریٹری جنرل بریگیڈیئر جنرل 'اسکندر مومنی' نے پیر کے روز انسداد منشیات کے دن کی مناسبت سے منعقدہ ایک کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہی.
جنرل مومنی نے مزید کہا کہ منشیات کے باعث 76 فیصد موت کی وجہ افیون سے تیار شدہ منشیات ہیں.
انہوں نے کہا کہ ایرانی قائد انقلاب کی ہدایات کے مطابق، منشیات کی اسمگلنگ کے خلاف جنگ کرنا ایک بڑا جہاد کے مترادف ہے.
یہ بات قابل ذکر ہے کہ اسلامی جمہوریہ ایران افغانستان سے یورپ تک منشیات اسمگلنگ کرنے کے راستے میں واقع ہونے کی وجہ سے اس لعنت کی روک تھام کی فرنٹ لائن پر ہے.
ایران، افغانستان کے ساتھ پڑوسی ہونے کی وجہ سے منشیات سمگلنگ کا نشانہ بنا ہوا ہے.
2001 میں امریکہ اور اس کے اتحادیوں نے دہشتگردی کے خلاف نام نہاد جنگ کے بہانے سے افغانستان پر جارحیت کی جس کی وجہ سے منشیات کی پیداوار میں درجنوں فیصد اضافہ ہوا ہے.
اب تک ہزاروں ایرانی اہلکار منشیات کے خلاف جنگ میں اپنی جانوں کا نذرانہ دے چکے ہیں.
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
2 + 6 =