افغانستان کی سیکورٹی، استحکام اور ترقی کے خواہاں ہیں: ایرانی صدر

تہران، 15 جون، ارنا – ایرانی صدر مملکت نے ایران اور افغانستان کے تعلقات کو مزید مستحکم بنانے کی ضرورت پر زور دیتے ہوئے کہا ہے کہ ایران افغانستان کی سیکورٹی، استحکام اور ترقی کا خواہاں ہے.

یہ بات صدر روحانی نے ہفتہ کے روز تاجکستان کے دارالحکومت دوشنبہ میں منعقدہ ایشیا میں پانچویں باہمی تعاون اور اعتماد سازی کی تنظیم (CICA) کے اجلاس کے موقع پر افغان چیف ایگزیکٹیو''عبداللہ عبداللہ'' کے ساتھ ملاقات کرتے ہوئے کہی.

انہوں نے علاقائی اور دوطرفہ تعلقات جیسے ٹرانزٹ کے شعبے میں باہمی تعاون کے فروغ کے لیے موجودہ صلاحیتوں کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ ان صلاحیتوں کو ایران اور افغانستان کے مشترکہ کمیشن کے ایجنڈے میں شامل کرنا ہوگا.

انہوں نے انسداد منشیات کے شعبے میں اجتماعی کوشش کی اہمیت پر زور دیتے ہوئے کہا کہ سماجی نقصانات کے علاوہ، دہشت گردی کی مالی امداد کا ایک بڑا حصہ، منشیات کی اسمگلنگ کے ذریعے فراہم ہوتی ہے اسی لیے ہم منشیات کی اسمگلنگ کے خلاف سنجیدہ مقابلہ کرنا ناگزیر ہیں.

صدر روحانی نے کہا کہ خطی ممالک بشمول ایران اور افغانستان کی سلامتی ایک دوسرے سے منسلک ہے توعلاقائی استحکام اور ترقی کا قیام خطے کے ممالک کے تعاون پر منحصر ہے.

اس موقع میں عبداللہ عبداللہ نے اپنے ملک سے ایرانی قوم اور حکومت کی حمایتوں کی تعریف کرتے ہوئے کہا کہ افغانستان ایران کے ساتھ اقتصادی، تجارتی اور سیاسی سمیت تمام شعبوں میں باہمی تعاون بڑھانے کی خواہشمند ہے.

افغان چیف ایگزیکٹیو نے دہشتگردی اور منشیات کی اسمگلنگ کے خلاف ایرانی اقدامات کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ ان شعبوں میں ایران اور افغانستان کے درمیان باہمی تعاون بڑھانا اشد ضروری ہے.

تفصیلات کے مطابق، ایرانی صدر آج کرغزستان کا ایک روزہ دورہ مکمل کر کے ایشیا میں باہمی تعاون اور اعتماد سازی کی تنظیم (CICA) کے اجلاس میں شرکت کیلئے تاجکستان میں روانہ ہوگئے.  

9410٭274٭٭
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
2 + 2 =