ایرانی دستکاری صنعت، پرانی ثقافت اور تاریخ کا منہ بولتا ثبوت ہے

تہران، 10جون،ارنا- دستکاری صنعت در اصل فن اور صنعت کا مجموعہ ہے جو ہر کسی ملک کی ثقافت، صنعت اور وہاں کے باسیوں کی مہارت اور ان کے اندر چھپی ہوئی صلاحیتوں کی عکاسی کرتی ہے۔

دستکاری صنعت، فنکار کی سوچ، حس، اور فن کا مجموعہ ہے لہذا اس صنعت، ہر کسی ملک کی تاریخ اور ثقافت کا منہ بولتا ثبوت اور وہاں کے رہنے والوں کے ذوق اور فن کی بھر پور عکاسی کرتی ہے۔



ایران کی دستکاری صنعت کی مصنوعات مختلف قسم کی ہیں اور پوری دنیا میں بے مثال ہیں جن کی جڑیں ایران کی پرانی تاریخ اور ثقافت سے جڑی ہوئی ہیں۔



ایران میں دستکاری مصنوعات بہت پرانی ہیں جن کو مختلف شعبوں میں تقسیم کیا جاسکتا ہے۔



ایران کی وہ دستکاری مصنوعات جو دنیا بھر میں مشہور ہیں:



**ہاتھ سے بُنے ہوئے قالین



ہاتھ سے تیار کیے جانے والے قالین اور گلیم جسے اردو میں "دری" کہتے ہیں، قدیم زمانے سے اب ایران کے مختلف قوموں کی علامت ہیں جو منفرد ڈیزائنوں اور کوالیٹی کی وجہ سے دنیا بھر میں مقبول ہیں اور دن بدن میں ان کی مانگ میں اضافہ ہوتا جا رہا ہے۔





 ایران میں خوبصورت اور دیدہ زیب ہاتھ سے بُنے ہوئی قالین، اپنے منفرد روایتی ڈیزائن سے 17 ویں صدی میں اپنے عروج تک پہنچ گئے اور اب تک ہاتھ سے تیار کیے جانے والے ایران کی مختلف قسم قالین جیسے "گلیم"، "زیلو"، "قالین" اور "قالیچہ" کا شمار دنیا کے پسندیدہ ترین دستکاری مصنوعات میں ہوتا ہے۔



ایرانی فنکار ہاتھ سے تیار کئے جانے والے قالین میں نہایت مہارت رکھتے ہیں اور ایرانی قالین کو دنیا بھر میں ایک خاص مقام حاصل ہے۔ ایران کے بعد چین، ہندوستان اور پاکستان کی باری آتی ہے۔



٭٭شیشے اور تانبے سے بنے ہوئے برتن



ایران کے پرانی ٹیکنالوجیوں میں سے ایک، منفرد ڈیزائن کے شیشے اور تانبے سے بنے ہوئے برتنوں کا نام دیا جا سکتا ہے۔



شیشے سے تیار کیے جانے برتنوں کا فن نہ صرف ایران میں بلکہ پوری دنیا میں انسان کے ہاتھوں سے تیار سب سے ابتدائی  ترقی یاقتہ ٹیکنالوجیوں میں ہوتا ہے۔



ایران کا شمار دنیا میں شیشے سے تیار برتنوں کے فن کے پیشروں میں ہوتا ہے اور شیشے سے بنے ہوئے مختلف قسم کے برتنوں کو عالمی سطح پر ایرانیوں کے نام پر رجسٹرد کردیا گیا ہے۔





 ایران میں یہ فن سلجوقی دور میں اپنے عروج تک پہنچ گیا اور اس عہد میں ایرانیوں نے شیشے پر مختلف نقوش کے فن کی ایجاد کے ذریعے اس فن میں کافی خاصہ ترقی کی۔



 اس کے علاوہ  ایران فنکار ، تانبےسے بنے ہوئے برتن کے فن میں انتہائی ماہر ہیں تانبے میں ایسی خصوصیات پائی جاتی ہیں جو تندرست اور صحت مند جسم کے لیے انتہائی ضروری ہوتے ہیں۔  تانبا اینٹی مائیکرو بیال، اینٹی آکسیڈنٹ، اینٹی کارسینوجینک اور انفلامیٹری خواص کا مجموعہ  ہے جب کہ یہ نباتاتی زہر(ٹاکسن)کو بھی بے اثر کرتا ہے۔





تانبے میں خطرناک جراثیم کو مارنے اور پیٹ میں ہونے والی سوزش سے محفوظ رکھنے کی صلاحیت ہوتی ہے جوکہ زخموں، انفیکشن اور بدہضمی سے بچنے کے لیے مفید گھریلو نسخہ ہے اسی لئے اب تابنے سے بنے ہوئے برتن دنیا بھر میں مقبول ہیں۔



٭٭مٹی سے بنے ہوئے مختلف قسم کے برتن



 ایران میں مٹی کے برتنوں اور اشیاء کی صدیوں پرانی تاریخ ہے اور آج بھی مٹی کے برتن بڑی خوبصورتی سے تیار کئے جاتے ہیں۔  بعض برتنوں پر اس قدر کام کیا جاتا ہے کہ انہیں دیکھ کر بنانے والے کے ہاتھوں رشک ہونے لگتا ہے۔



رنگ برنگے مٹی کے برتن اور خوبصورت اشیا آج بھی گھروں کی زینت سمجھی جاتی ہیں۔ کچھ لوگ آج بھی مٹی سے بنے برتن اور دیگر اشیا کو گھروں کی آرائش اور ان میں بنے کھانے کھانا پسند کرتے ہیں۔





  مٹی کے برتنوں کی تیاری کیلئے کمہار ایک خاص قسم کی مٹی استعمال کرتے ہیں۔ جس مٹی سے برتن بنتے ہیں وہ عام مٹی نہیں ہوتی۔ صرف چکنی یا سرخ مٹی سے ہی برتن تیار کئے جاتے ہیں۔



کمہاروں کا کہنا ہے کہ مٹی کا ایک برتن کے 56 مرحلوں سے گزرتا ہے تب جاکے ایک برتن بنتا ہے۔ مٹی کے برتن اپنی ایک الگ پہچان رکھتے ہیں۔ مٹی کے برتن میں کھانا کھانے کے بے شمار فوائد ہیں۔ جن سے انکار ناممکن ہے۔



 مٹی سے بنے ہوئے برتن کا سب سے پرانا کارخانہ ایرانی شہر شوش میں واقع ہے۔



**شیشہ گری اور معرق کا فن



ایران میں تیار معرق اور شیشہ گری کی مصنوعات اتنی دلفریب ہین کہ ہر کسی دیکھنے والے کے دل کو موہ لیتی ہیں۔



ایران، معرق (لکڑی کے ٹکڑوں سے مرصع اور نقوش) سمیت شیشہ گری یا میناکاری کی مصنوعات کا سب سے زیادہ برآمد کنندہ ملک ہے۔





شیشہ گری کی صنعت کا عروج اسلامی دور سے شروع ہوا اور بادشاہوں کے دور کی بھی زینت بنا، پرانے وقتوں کے محلات سمیت درگاہوں اور گھریلو اشیاء بھی شیشہ گری کی زینت بننے لگی اور آج بھی یہ ہنر اپنے اندر نئی جدت اور انداز کے ساتھ زندہ ہے۔



وقت کے ساتھ شیشے پر میناکاری، سونے چاندی کی کندہ کاری، اور پتھروں کا کام نظر آنے لگا ہے۔ایران میں میناکاری یا شیشہ گری کا کام ایک نئے انداز میں بنایا جارہا ہے جسے بہت پسند کیا جارہا ہے۔







یہ صرف ایران کی دستکاری صنعت کی مصنوعات کے چند نمونے ہیں جو دنیا بھر میں معروف اور مقبول ہیں در اصل ایرانی دستکاری صعنت، ملک کی سیاحتی دلچسبیوں میں سے ایک ہے جو برآمدات سے حاصل کردہ زرمبادلہ کے ذخائر میں اضافہ کرنے میں انتہائی اہم کردار ادا کر سکتی ہے۔



**9467

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@


آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
1 + 1 =