امریکی معاشی جنگ سے ایران کو خوراک اور ادویات کی فراہمی بند ہے: ظریف

تہران، 1 جون، ارنا - ایرانی وزیر خارجہ نے کہا ہے کہ امریکہ، ایران پر معاشی جنگ مسلط کرتے ہوئے خوراک اور ادویات کی فراہمی کی راہ میں رکاوٹ بنا ہوا ہے.

«محمد جواد ظریف» نے اپنی ایک گفتگو میں مزید کہا کہ امریکہ نے ایرانی قوم کے خلاف کھلی جنگ مسلط کر رکھی ہے جس کی وجہ سے ایران کو خوراک، ادویات اور طیاروں کے پارٹس کی فراہمی میں بڑی مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے.
انہوں نے کہا کہ اس کے باوجود کہ عالمی عدالت انصاف نے امریکہ کو حکم دیا تھا کہ وہ ایران کے لئے ان تینوں اشیا کی فراہمی کو نہ روکے مگر امریکہ واضح انداز میں ایران کے خلاف دباو اور دھمکی آمیز پالیسی پر بدستور عمل پیرا ہے.
ظریف نے علاقائی امور سے متعلق بتایا کہ اسلامی جمہوریہ ایران ہمیشہ خطی ممالک کے ساتھ تعاون کے لئے آمادہ ہے اسی مقصد سے ہم نے عدم جارحیت معاہدے کی بھی پیشکش کردی لہذا علاقائی ممالک بالخصوص خلیج فارس کی ریاستوں کے لئے ہماری باہیں کھولی ہیں.
ایرانی وزیر خارجہ سے عالمی برادری پر زور دیا کہ وہ امن و سلامتی سے متعلق ایران کی مثبت پالیسی پر توجہ دے اور یہ بات سمجھے کہ ہم عالمی قوانین کی پاسداری کرنے والے ہیں لہذا دنیا ایران کے خلاف امریکہ کی پابندیاں اور معاشی جنگ سے لاتعلق نہ رہے.
انہوں نے مزید کہا کہ ایران اور ہمسایہ ممالک کے درمیان دینی اور ثقافتی رشتے ہیں جبکہ بعض خطی ممالک سامراج قوتوں کے ہمنوا بن کر خطے میں جنگ کو ہوا دے رہے ہیں جس کا نقصان خود علاقائی ممالک کو ہوگا.
محمد جواد ظریف نے بتایا کہ دنیا کو اب تک یہ واضح نہ ہوئی کہ امریکہ اپنی خارجہ پالیسی میں کس چیز کی تلاش میں ہے، جبکہ امریکی حکمرانوں میں ایک نئے حربے کا استعمال کرتے ہوئے ایران سے مذاکرات کرنے کا دعویٰ بھی کیا ہے جبکہ موجودہ امریکی انتظامیہ کے ہوئے ہوئے ان کی پالیسی واضح نہیں.
9410٭274٭٭
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
3 + 0 =