افغانستان، چابہار پورٹ کے شپنگ انڈسٹری میں سرمایہ کاری کیلئے پُرعزم

 تہران، 28 مئی، ارنا-  افغان وزرات ٹرانسپورٹ کے حکام نے اس عزم کا اعادہ کیا ہے کہ ایرانی بندرگاہ چابہار کے شپنگ انڈسٹری شعبے میں سرمایہ کاری کو بڑھانے کے ذریعے افغانستان اور ایرانی بندرگاہ چابہار کے درمیان شپنگ لائنز قائم کریں گے۔

اس بات کے باوجود کہ افغانستان اینٹرنشنل شپنگ آرگنائزیشن کے رکن ممالک میں سے نہیں ہے تاہم افغان وزرات ٹرانسپورٹ نے اس عزم کا اعادہ کیا ہے کہ ایرانی بندرگاہ چابہار میں شپنگ لائنز شعبے میں سرمایہ کاری کو بڑھانے کے ذریعے افغانستان اور ایرانی بندرگاہ چابہار کے درمیان شپنگ لائنز قائم کرے گا۔



 رپورٹ کے مطابق، تین مہینے قبل افغانستان نے ایرانی بندرگاہ چابہار کے ذریعے اپنی پہلی تجارتی کھیپ کو بھارت میں منتقل کیا اور کیونکہ افغانستان کو خطے کے کسی بھی سمندر تک رسائی حاصل نہیں ہے اسی لئے افغان کمپنیاں اپنی تجارتی کھپیوں کو زمینی راستے کے ذریعے ایرانی بندرگاہ چابہارمیں منتقل کرنے کے بعد وہاں سے انھیں بھارت روانہ کرتی ہیں۔



واضح رہے کہ بندرگاہ چابہار کے باضابطہ افتتاح سے کوئی ایک سال گزر گیا ہے اور اسی وقت سے اب تک افغان تجارت کاروں اور کار باری حلقے کو چابہار اور افغانستان کے درمیان ایک شپنک لائن کی تعمیر میں دلچسبی رکھتے ہیں لیکن افغان محکمہ ٹرانسپورٹیشن کے بہت سارے وعدوں کے باوجود اب تک ان کی یہ درخواست پوری نہ ہوگئی ہے۔



افغان چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری کے سربراہ "جان آقا نوید" کا کہنا ہے کہ افغانستان کے نجی شعبے کے اراکین بالخصوص افغان چیمبر آف کامرس کو اس حوالے سے جہازوں خریدنے میں دلچسبی رکھتے ہیں لیکن مسئلہ یہ ہے کہ افغانستان، اینٹرنشنل شپنگ آرگنائزیشن کا رکن ممبر نہیں ہے۔



 دوسری طرف افغان محکمہ ٹرانسپورٹیشن کا کہنا ہے کہ اینٹرنشنل شپنگ آرگنائزیشن کی رکنیت سمیت افغانستان اور ایرانی بندرگاہ چابہار کے درمیان شپنگ لائنز قائم کرنے کے حوالے سے درخواست دی گئی ہے۔



9467**



ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے


آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
6 + 12 =