28 مئی، 2019 1:31 PM
Journalist ID: 1837
News Code: 83330891
0 Persons
بیانات اہم نہیں، امریکہ رویہ بدلے: ایران

تہران، 28 مئی، ارنا - اسلامی جمہوریہ ایران نے کہا ہے کہ ہمارے نزدیک امریکی حکمرانوں کے بیانات کی کوئی اہمیت نہیں بلکہ ان کو اپنے نقطہ نظر اور رویے میں تبدیلی لانی ہوگی.

یہ بات سید عباس موسوی نے منگل کے روز تہران میں منعقدہ پریس کانفرنس میں امریکی صدر کے حالیہ بیانات پر ردعمل کا اظہار کرتے ہوئے کہی.


انہوں نے کہا کہ ٹرمپ کے حالیہ بیانات اسلامی جمہوریہ ایران کی کوئی اہمیت نہیں بلکہ ہم امریکہ کے رویے اور اس کے اقدامات کے ذریعے خطے پر مرتب ہونے والے آثار کے مطابق فیصلہ کریں گے.


موسوی نے ایرانی وزیر خارجہ کی جانب سے عدم جارحیت کی تجویز کا حوالہ دیتے ہو‏ئے کہا کہ خلیج فارس کے عربی ممالک ہمارے سب سے اہم پڑوسیوں میں سے ہیں اور عدم جارحیت پر ایران کی تجویز کوئی نئی بات نہیں.


ایرانی ترجمان نے کہا کہ ہم اس بد امن خطے میں رہنے کے خواہاں نہیں تو تنازعات کو کم کرنے اور خاتمہ دینا چاہتے ہیں.


موسوی نے کہا کہ جاپانی وزیر خارجہ ' شینزو آبے 'کے حالیہ دورہ ایران، جاپان اور چین کے درمیان تعلقات کیلئے ایک اہم موڑ ہو سکتا ہے.


انہوں نے نائب ایرانی وزیر خارجہ 'سید عباس عراقچی' کے کویت، قطر اور عمان دوروں کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ عراقچی کا پیغام، ایران کی دوستی اور خطی ممالک کیساتھ باہمی تعاون کی توسیع کیلئے ایران کی تیاری ہے.


انہوں نے مزید کہا کہ ہماری خارجہ پالیسی کی پہلی ترجیج خلیج فارس اور خطے کے ممالک کیساتھ باہمی تعلقات  بڑھانا ہے.
یاد رہے کہ ٹرمپ نے حالیہ دنوں میں ٹوکیو میں جاپانی وزیر اعظم شینزو ابے کے ساتھ مشترکہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے یہ دعویٰ کیا تھا کہ ایران بات چیت چاہتا ہے لہذا اگر وہ مذاکرات چاہتے ہیں تو ہم بھی تیار ہیں.


9410٭274٭٭
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
3 + 7 =