ایران سے تعاون کیلئے امریکہ سے اجازت نہیں لیں گے: روسی سفیر

رشت، 21 مئی، ارنا- اسلامی جمہوریہ ایران میں تعینات روسی سفیر نے کہا ہے کہ ان کا ملک ایک آزاد اور خودمختار ملک ہے جس کو ایران کیساتھ باہمی تعاون کیلئے امریکہ سے اجازت لینے کی کوئی ضرورت نہیں ہے۔

یہ بات "لوان جاگاریان" نے ایران کے شمالی صوبے گیلان کے گورنر جنرل "مصطفی سالاری" کیساتھ ایک ملاقات میں گفتگو کرتے ہوئے کہی۔
انہوں نے حالیہ سالوں کے دوران ایران اور روس کے درمیان تجارتی تعلقات کے فروغ پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ امریکہ کی جانب سے ایران کیخلاف سخت پابندیوں اور دھمکیوں کے باوجود ہم ایران کے حوالے سے اپنے موقف کو دہراتے ہوئے اسلامی جمہوریہ ایران کی بھر پور حمایت کریں گے۔
انہوں نے ایران جوہری معاہدے سے متعلق امریکی اقدامات پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ روس ایک خودمختار اور آزاد ملک ہے جس کو ایران کیساتھ مشترکہ تعاون کے حوالے سے امریکہ سے اجازت لینے کی کوئی ضرورت نہیں ہے۔
روسی سفیر نے دونوں ملکوں کے درمیان تجارتی سرگرمیوں کا سلسلہ جاری رکھنے کی یقین دہانی کرائی۔
اس موقع پر گورنر جنرل گیلان نے کہا کہ ایرانی صوبہ گیلان دونوں ملکوں کے درمیان تعلقات کی توسیع میں اہم کردار ادا کر سکتا ہے اور ایران اور روس کے صدور نے بھی دونوں ممالک کے درمیان تعلقات کے فروغ پر زور دیا ہے۔
انہوں نے مزید کہا کہ ایران اور روس کے درمیان باہمی تجارتی لین دین میں 60 فیصد اضافہ دیکھنے میں آیا ہے اور ایرانی بندرگاہیں "انزلی" اور " آستارا" کی برآمدات اور درآمدات کی مصنوعات کے اکثر حصے روس سے ہیں۔
سالاری نے "رشت – آستارا" ریلوے منصوبے کی تکمیل کی اہمیت کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ حکومت ایران، رشت ریلوے کو دوسال سے کم انزلی ریلوے اور اس کے بعد کسپین بندرگاہ سے منسلک کرنے کی بھر پور کوشش کرتی ہے۔
9467**
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@