جب تک امریکہ، ایران کا احترام نہ کرے اس سے مذاکرات نہیں کریں گے : ظریف

تہران، 21 مئی، ارنا- اسلامی جمہوریہ ایران کے وزیر خارجہ نے کہا ہے کہ جب تک امریکہ جوہری معاہدے سے متعلق اپنے کیے گئے وعدوں پر عمل کرنے کے ذریعے اسلامی جمہوریہ ایران کا احترام نہ کرے تب تک ہم امریکی صدر"ڈونلڈ ٹرمپ" کی انتظامیہ سے مذاکرات نہیں کریں گے۔

"محمد جواد ظریف" نے سی این این نیوزچینل سے انٹرویو دیتے ہوئے مزید کہا کہ امریکہ نےعلاقے میں اپنی فوجی موجودگی کو تقویت دینے کے ذریعے ایک خطرناک کھیل کا آغاز کر دیا ہے۔
انہوں نے امریکہ کی جانب سے خلیج فارس میں طیارے بردار بحری بیڑا " یو اس ایس ابرہم لنکن" اور بمبار طیارے تعینات کرنے کی شدید تنقید کرتے ہوئے کہا کہ اس چھوٹے علاقے میں ان تمام فوجی ساز و سازمان کو تعینات کرنا، خود حادثے کا باعث بنتا ہے۔
ایرانی وزیر خارجہ نے بہت بڑے احتیاط سے اقدامات اٹھانے کی ضرورت پر زور دیتے ہوئے کہا کہ امریکہ نے ایک خطرناک کھیل کا آغاز کر دیا ہے۔
انہوں نے ایران جوہری معاہدے سے امریکی علیحدگی پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ ایران نے حسن سلوک پر مبنی اقدامات اٹھائے ہیں اور اب ہم وعدہ نہ نبھانے والوں سے مذاکرات پر کوئی دلچسبی نہیں رکھتے ہیں۔
ظریف نے مزید کہا کہ ایرانی عوام ہرگز نہیں جھکیں گے اور اسلامی جمہوریہ ایران کبھی بھی دباؤ کے ذریعے مذاکرات کو نہیں مانے گا۔
انہوں نے امریکی حکام کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ آپ ایرانیوں کو دھمکی دینے کے ذریعے ان کو مذاکرات کرنے کیلئے مجبور نہیں کر سکتے ہیں۔
ایرانی وزیر خارجہ نے مزید کہا کہ تعلقات کا سلسلہ جاری رکھنے کا طریقہ دھمکی دینا نہیں بلکہ دوسروں کا احترام کرنا ہے۔
9467**
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@