عراق کو ایران اور امریکہ کے درمیان ثالثی کرنی ہوگی: عمار حکیم

بغداد، 21 مئی، ارنا - اعلی عراقی سیاسی رہنما نے خطے میں محاذ آرائی کے سنگین نتائج پر انتباہ کرتے ہوئے حکومت عراق پر زور دیا ہے کہ اسے ایران اور امریکہ کے درمیان مصالحتی کردار ادا کرنا ہوگا.

یہ بات «سید عمار حکیم» نے عراقی دارالحکومت بغداد میں ایک مذہبی تقریب میں خطاب کرتے ہوئے کہی.
انہوں نے کہا کہ تمام علاقائی ممالک کو ایران اور امریکہ کے درمیان ممکنہ جنگ کے تباہ کن نتائج کا شکار ہوں گے حتی تیسرے عالمی جنگ بن سکتا ہے.
حکیم نے کہا کہ صرف ناجائز صہیونی ریاست علاقے کے جنگ سے فائدہ اٹھ کرے گی لہذا ہم حکومت اور پارلیمنٹ سے ایران اور امریکہ کے درمیان تنازعات کے خاتمے کے لئے ثالثی ادا کرنے کا مطالبہ کر رہے ہیں.
انہوں نے علاقے میں بڑھتے ہوئے تنازعات کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ ایران اور امریکہ کے درمیان حالیہ کشیدگی تمام خطی ریاستوں کے لئے باعث تشویش ہے اور عراق اس حوالے سے پانچ اہم اقدامات کرے جو سب سے پہلی ترجیح علاقے میں جنگ کے آغاز کو روکنا ہے.انہوں نے مزید کہا کہ خطے میں کشیدگی کے خاتمے کے لئے عراقی ثالثی کرسکتا ہے اور اسے کرنی ہوگی.
274*9393**
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@