ایران کا غیرعلاقائی ملکوں کی سازشوں پر انتباہ

نیو یارک، 21 مئی، ارنا – اسلامی جمہوریہ ایران نے غیرعلاقائی ممالک کی سازشوں پر خبردار کرتے ہوئے کہا ہے کہ خلیج فارس کے مسائل کا واحد حل خطی ممالک کے آپس میں بات چیت ہے.

اقوام متحدہ میں تعینات ایران کے مستقل مندوب «مجید تخت روانچی» نے سربراہ اقوام متحدہ اور صدر سلامتی کونسل کے نام ایک خصوصی خط میں بعض غیرعلاقائی ممالک کی شرانگیزی اور سازشوں پر انتباہ کیا.
انہوں نے مزید کہا کہ اس مراسلے کا مقصد خلیج فارس میں سیکورٹی کی تشویشناک صورتحال کو اُجاگر کرنا ہے جہاں بعض غیرعلاقائی ممالک اپنے ناجائز مفادات کو حاصل کرنے میں لگے ہوئے ہیں.
ایرانی مندوب نے کہا کہ غیرعلاقائی ممالک نے مشرق وسطی میں اپنے بعض اتحادیوں سے مل کر اس خطے کی صورتحال کو گھمیبر کردیا ہے اور غیرمعمولی نیول فورسز کی تعینات سے وہ اپنے غیرقانونی اہداف حاصل کرنا چاہتے ہیں.
انہوں نے خبردار کیا کہ ایسے تمام اقدامات کا مقصد خلیج فارس خطے میں موجود ممالک کے درمیان تفرقہ ڈالنا اور ان کے درمیان کشیدگی کو بڑھانا ہے لہذا اگر صورتحال کا کنٹرول نہ کیا جائے تو خطے میں غیرضروری بحران رونما ہوگا.
تخت روانچی نے مزید کہا کہ اسلامی جمہوریہ ایران نے بارہا شرانگیزی پھیلانے والے غیرعلاقائی ممالک کی مشکوک نقل و حرکت پر انتباہ کیا تھا جن سے خطے اور عالمی برادری کو سنگین خطرات لاحق ہیں.
انہوں نے اس بات پر زور دیا کہ ایران نے ہمیشہ لڑائی اور جنگ کو مسترد کیا ہے اور کبھی بھی اپنی خارجہ پالیسی میں جنگ کو ترجیح نہیں دی تاہم اگر ایران پر کوئی جنگ مسلط کی گئی تو ہم اپنے دفاع میں کوئی کسر نہیں چھوڑیں گے.
ایرانی مندوب نے وزیر خارجہ محمد جواد ظریف کے حالیہ بیانات کا حوالہ دیتے ہوئے مزید کہا کہ ایران نے خلیج فارس کے ممالک کے درمیان تعاون کے فروغ کے لئے ریجنل ڈائلاگ فورم کی تشکیل کی تجویز دی رکھی ہے.
انہوں نے سیکریٹری جنرل اقوام متحدہ سے مطالبہ کیا کہ علاقائی امن و سلامتی کی بالادستی کے لئے سلامتی کونسل کی قرارداد 598 کی شق نمبر 8 کو لاگو کردیا جائے.
تخت روانچی نے صدر سلامتی کونسل سے بھی مطالبہ کیا کہ ایران کے اس خط کو سلامتی کونسل کی دستاویز میں شامل کیا جائے.
274**9393*
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@