قرآنی نمائش، اسلامی سائنس کی ترقی کیلئے ایک موقع ہے: پاکستانی ماہر

تہران، 18 مئی، ارنا – اسلامیات کے شعبے میں پاکستان کے ایک ماہر نے کہا ہے کہ ایسی نمائشوں کا انعقاد، اسلامی اور قرآنی علوم کی پوزیشن کے فروغ کیلئے ایک موقع ہے.

يہ بات پاکستانی پروفیسر سید محمد فہیم عباس نے ہفتہ کے روز ایرانی دارالحکومت میں منعقدہ 27 ویں قرآنی نمائش میں ارنا نیوز ایجنسی کی اردو سروس کے ساتھ خصوصی انٹرویو دیتے ہوئے کہی۔‍
قرآنی نمائش میں پاکستان کے اسٹال کا ذمہ دار نے اس نمائش کے معیار کا جائزہ لیتے ہوئے کہا کہ الحمدللہ یہ بڑی زبردست نمائش ہے اور ہم اس نمائش میں قرآن کریم کے نسخوں، تفسیر، اور اسلامی سائنس کے شعبوں میں زیادہ اطلاعات مل سکتے ہیں۔
انہوں نے ایسی نمائش کے فوائد کے بار ے میں پوچھے گئے ایک سوال کے جواب میں کہا کہ وہ لوگ ایسی نمائشوں میں آتے ہیں قرآن پاک کے مختلف پرانے نسخوں سے آشنا ہوکر اپنی نئی مطالب کو دوسروں تک منتقل کر سکتے ہیں۔
پاکستانی پروفیسر نے اس بین الاقوامی نمائش میں ایران کی پرتپاک میزبانی کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ ایران نے نئی ایک بہت بڑا کام کیا ہے کہ تمام ممالک کے نمائندوں کی دعوت دے کر انہیں موقع دیا کہ وہ اپنے کام سے اس ملک کے لوگوں کو آگاہ کر سکیں۔
انہوں نے کہا کہ تہران کے علاوہ اور بھی کافی شہریں جیسے قم، اصفہان، شیراز، لاریجان، لاہیجان، شاہرود اور بسطام سیر کی ہے اور آئندہ میں بھی ایران کے دوسرے شہریں جیسے بندر انزلی، لرستان اور یزد میں سفر کرنا چاہتے ہیں۔
انہوں نے ایرانی لوگوں کے برتا‎‎ؤ اور ثقافت پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ الحمدللہ ایرانی لوگ بہت ملنسار ہیں اور ان کے رویے اور گفتگو بھی اچھی ہے ہرچند ہم دنیا بھر میں ہر طرح لوگ ملتے ہیں اچھی بھی ہوتے ہیں برے بھی ہوتے ہیں۔
پاکستانی عہدیدار نے کہا کہ تہران کے وسائل بہت اچھے ہیں لیکن ٹرفیک کا مسئلہ زیادہ ہے۔
واضح رہے کہ 27 ویں عالمی قرآنی نمائش "قرآن، معنائے زندگی" کے عنوان کے تحت 11 سے 25 مئی تک ایرانی دارالحکومت تہران میں انعقاد کیا جاتا ہے۔
9410*274**
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@