خطے میں کوئی جنگ وقوع پذیر نہیں ہوگی: ایرانی وزیر خارجہ

بیجنگ، 18 مئی، ارنا- ایرانی وزیر خارجہ نے کہا ہے کہ قائد اسلامی انقلاب حضرت آیت اللہ خامنہ ای کے مطابق خطے میں کسی بھی طرح جنگ وقوع پذیر نہیں ہوگی کیونکہ نہ ایران جنگ کا خواہاں ہے اور نہ ہی کسی کو اس خوش فہمی میں ہے کہ خطے میں ایران کیساتھ مقابلہ کرسکتا ہے لیکن ضروری ہے کہ امریکی خطرناک اقدامات، اس ملک کے عوام کیلئے بے نقاب ہوجائے۔

یہ بات "محمد جواد ظریف" نے ارنا نمائندے کیساتھ گفتگو کرتے ہوئے کہی۔
انہوں نے مزید کہا کہ حقیقت یہ ہے کہ امریکی صدر نے حالیہ دنوں میں باضابطہ طور پر کہا ہے کہ وہ جنگ کا خواہاں نہیں ہے لیکن اس کے قریب بعض افراد ہیں جو امریکہ کو ایران کے مقابلے میں طاقتور بن جانے کے بہانوں سے ٹرمپ کو ایران کیخلاف جنگ کیلئے اکسا رہے ہیں۔
ظریف نے مزید کہا کہ ٹیم "بی" کے بارے میں جو انہوں نے اپنے حالیہ دورہ نیو یارک میں کہا ہے وہ سارے عوام پر واضح ہے لیکن امریکی سوسائٹی کی نفسیاتی صورتحال کی وجہ سے کسی کو اس بات کو بے نقاب کرنے کی ہمت نہیں تھی۔
ظریف نے مزید کہا کہ "سب سے پہلا امریکہ America first" کی سیاست "سب سے پہلا ناجائز صہیونی ریاست" یا "سب سے پہلےعلاقے کے مرتجع حکام" کی سیاست میں تبدیل ہو رہی ہے اور ان ممالک کے مفادات بھی مالی مفادات اور پروپیگنڈوں کے ذریعے امریکہ پر مسلط کر دئے گئے ہیں اور یہ ممالک خطے میں حکمران بنے جار رہے ہیں۔
انہوں نے مزید کہا کہ ایران جوہری معاہدے کا سرانجام عالمی برداری کے اختیار میں ہے۔ عالمی برداری نے اب تک ایران جوہری معاہدے کی حمایت کی ہے لیکن ان کی حمایتیں زیادہ سے زیادہ بیان جاری کرنے یا کہ سیاسی مواقف اپنانے کی صورت میں ہوئی ہیں اور اب یہ سیاسی مواقف، معاشی شعبے میں عملی اقدامات اٹھانے میں بدل ہونا چاہیے تا کہ ایرانی عوام جوہری معاہدے کے ثمرات سے مستفید ہوجائیں۔
ایرانی وزیر خارجہ نے مزید کہا کہ جوہری معاہدے کی مشترکہ کمیشن کے اراکین نے اب تک چار مرتبہ اسلامی جمہوریہ ایران کو اپنے کیے گئے وعدوں پر عمل کرنے کی یقین دہائی کرائی ہے اور اب ان وعدوں پر عمل درآمد کرنے کا وقت آگیا ہے۔
9467**
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@