ایران لڑائی نہیں چاہتا تاہم اپنا دفاع جانتا ہے

لندن، 18 مئی، ارنا - برطانیہ میں تعینات اسلامی جمہوریہ ایران کے سفیر نے کہا ہے کہ ہم امریکہ سے لڑائی نہیں چاہتے تاہم ایرانی عوام امریکی عزائم کے سامنے اپنے دفاع کے لئے آمادہ ہیں.

«حمید بعیدی نژاد» نے بین الاقوامی بی بی سی ریڈیو سے گفتگو کرتے ہوئے مزید کہا کہ ایرانی قوم امریکہ کے سامنے مزاحمت کی قیمت چکانے کے لئے تیار ہے.
انہوں نے بتایا کہ ایران صبر و تحمل کے ساتھ آگے بڑھا ہے، عوام حکومت کے ساتھ کھڑے ہیں ہے. جوہری معاہدے سے امریکہ کی یکطرفہ علیحدگی کو ایک سال مکمل ہوگیا جبکہ یورپی ممالک نے بھی اپنے وعدوں سے متعلق کوئی اقدام نہیں کیا اور نہ ہی ایران کے معاشی اور تجارتی مفادات حاصل ہوسکے.
ایرانی سفیر نے مزید بتایا کہ ہماری قوم یقین رکھتی ہے کہ حکومت نے کوئی کسر نہیں چھوڑی اور جوہری معاہدے کے دیگر فریقین کو ایک سال کا وقت دیا تا کہ وہ مسائل کا خاتمہ کریں لیکن اب ہم اس نتیجے پر پہنچ گئے ہیں کہ اگر موثر اقدامات نہیں اٹھائے گئے تو ایران جوہری معاہدہ ختم ہوجائے گا.
انہوں نے کہا کہ امریکہ غیرضروری کشیدگی کو ہوا دے رہا ہے اور اشتعال انگیزی پھیلا رہا ہے اگر یہ سلسلہ جاری رہا تو ہم بھی اس صورتحال کا سامنا کرنے کے لئے پُرعزم ہیں.
بعیدی نژاد نے مزید کہا کہ ایران لرائی میں پہل نہیں کرے گا مگر ہم یہ اطمینان سے کہتے ہیں کہ ہماری پوری قوم امریکہ کے سامنے مزاحمت کرے گی.
انہوں نے کہا کہ ایران ہمیشہ خطے میں امن و استحکام کا حامی ہے جبکہ امریکہ، جوہری معاہدے سے یکطرفہ نکلنے کے ساتھ اشتعال انگیزی میں اضافہ کیا اور اس کے علاوہ پاسداران اسلامی انقلاب فورس کو بھی نام نہاد دہشتگردوں کی فہرست میں ڈال دیا.
حمید بعیدی نژاد نے ایران مخالف معاشی پابندیوں پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ ہم اس وقت دشوار حالات سے گزر رہے ہیں تاہم ایران کی اندرونی قابلیت کو دیکھتے ہوئے ہم مزید اچھی کارکردگی دیکھا سکتے ہیں.
274**
9393* ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@